روس نے شام میں ترک فوج کے 3 جوان شہید اور 11کو زخمی کر دیا

انقرہ(قدرت روزنامہ10فروری2017)روس نے شام میں ترک فوج کے 3 جوان شہید اور 11کو زخمی کر دیا جس پر روسی صدر ولادیمیر پیوٹن نے ترک ہم منصب سے معذرت کرتے ہوئے واقعے پر افسوس کا اظہار کیا ہے.

تفصیلات کے مطابق ترک فوج کے ترجمان نے کہا ہے کہ شام میں روسی طیاروں کی بمباری سے 3ترک فوجی شہید اور 11زخمی ہو گئے تاہم یہ بمباری غلطی کا نتیجہ تھی .

ترک فوجی حکام کا کہنا ہے کہ واقعہ شمالی شام کے الباب شہر میں پیش آیا جہاں ترک اور روسی فوجی داعش کے خلاف جنگ میں شریک ہیں. واقعے کے بعد روسی صدر ولادیمیر پوٹن نے وضاحت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ترک فوجیوں کی ہلاکت کا واقعہ رابطہ نہ ہونے پر غلطی سے پیش آیا ہے.

بیان میں واضح کیا گیا کہ صدر ولادی میر پوٹن نے شام میں غلطی سے بمباری کے دوران تین ترک فوجیوں کی شہادت پر صدر اردوان اور ترک حکومت سے تعزیت کی ہے جبکہ اس موقع پر دونوں رہنماؤں نے داعش کے خلاف جنگ جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کیا  .روسی جرنیل گیراسی موف نے بھی اس افسوس ناک واقعے پر اپنے ترک ہم منصب جنرل خلوصی آکار سے ٹیلیفون پر تعزیت کا اظہار کیا.

 روسی وزارت دفاع نے اس حوالے سے کہا کہ شام میں جاری دہشت گردی کے خلاف جنگ میں دونوں ملک تعاون جاری رکھیں گے.وزیر خارجہ مولود چاوش اولو نے بھی روسی وزیر خارجہ سرگی لیوروف سے ٹیلیفون پر رابطہ کیا جس میں روسی وزیر نے افسوس کا اظہار کیا.خیال رہے روس اور ترکی الباب کے علاقے میں دولتِ اسلامیہ کے خلاف مشترکہ فضائی کارروائی کر رہے ہیں.
..


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top