بیگم سے لڑائی کے لئے یوں تو کوئی بھی وقت اچھا نہیں لیکن اگر آپ یہ خطرہ مول لینا ہی چاہیں تو ڈاکٹر مائیکل بروئس کی تحقیق آپ کے لئے بہت مددگار ثابت ہوسکتی ہے

11

لندن (قدرت روزنامہ10فروری2017)بیگم سے لڑائی کے لئے یوں تو کوئی بھی وقت اچھا نہیں لیکن اگر آپ یہ خطرہ مول لینا ہی چاہیں تو ڈاکٹر مائیکل بروئس کی تحقیق آپ کے لئے بہت مددگار ثابت ہوسکتی ہے. ڈاکٹر مائیکل کا تعلق سنٹر فار سرکیڈین بیالوجی سے ہے، جس کی تحقیقات کا مرکزی نقطہ دن کے اوقات اور انسانی مزاج میں تعلق کا مطالعہ کرنا ہے.

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق ڈاکٹر مائیکل کہتے ہیں کہ بیگم کے ساتھ لڑائی کے لئے بہترین وقت معلوم کرنے سے پہلے آپ کو یہ معلوم ہونا چاہیے کہ آپ کی شخصیت کس ٹائپ کی ہے. وہ انسانی شخصیت کو چار بنیادی اقسام میں تقسیم کرتے ہیں، جنہیں ’کرونوٹائپس‘ کا نام دیا جاتا ہے. یہ اقسام کچھ یوں ہیں:

 ٹائپ 1: ڈولفن یہ لوگ بہت محتاط، اپنے آپ میں گم رہنے والے مگر انتہائی ذہین ہوتے ہیں. یہ صبح جاگتے ہیں تو خود کو تھکا ہوا محسوس کرتے ہیں لیکن رات کے پچھلے پہر پوری طرح تروتازہ ہوتے ہیں. ٹائپ 2: ریچھ یہ میل جول کو بہت پسند کرتے ہیں اور لوگوں کے ساتھ کھل کر بات چیت کرتے ہیں. انہیں صبح جاگنے میں بہت مشکل کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور عموماً پوری طرح جاگتے جاگتے دوپہر یا سہ پہر کردیتے ہیں. ٹائپ تین: شیر یہ لوگ دوسروں کا خیال رکھنے والے اور عملیت پسند ہوتے ہیں . یہ صبح سویرے اٹھتے ہیں اور اس میں خوشی بھی محسوس کرتے ہیں. یہ بہت محنتی اور حقیقت پسند ہوتے ہیں. ٹائپ 4: بھیڑیا یہ قنوطیت پسند لوگ ہوتے ہیں اور ان کا موڈ بھی تیزی سے تبدیل ہوتا رہتا ہے. یہ بے حد جذباتی ہوتے ہیں لیکن تخلیقی صلاحیتوں سے مالا مال ہوتے ہیں. انہیں بھی صبح جلد اٹھنے سے نفرت ہوتی ہے.
 ڈاکٹر مائیکل کہتے ہیں کہ اگر آپ سمجھ لیں کہ آپ کی ’کرونوٹائپ‘ کیا ہے تو اب آپ یہ بھی جان سکتے ہیں کہ بیگم سے لڑائی کے لئے بہترین وقت کونسا ہے. اگر آپ کی شخصیت ’ڈولفن‘ ہے تو رات کے کھانے کے بعد لڑائی کرنا بہترین رہے گا. اگر آپ کی شخصیت ’شیر‘ ہے تو سونے سے ایک یا دو گھنٹہ پہلے لڑائی کرسکتے ہیں. اگر آپ کی شخصیت ’ریچھ‘ ہے تو کام سے فارغ ہونے کے بعد مگر رات کے کھانے سے پہلے لڑائی کرنا بہتر رہے گا. اگر آپ ’بھیڑیا‘ شخصیت کے مالک ہیں تو رات کے کھانے کے بعد مگر سونے سے کم از کم دو گھنٹے پہلے لڑائی کریں. ڈاکٹر مائیکل کا کہنا ہے کہ شخصیت کے مطابق وقت کا انتخاب کرکے لڑائی کی جائے تو اس کا فائدہ یہ ہوتا ہے کہ آپ کے دماغ پر اس کے منفی اثرات بہت کم ہوتے ہیں اورجب آپ سونے کے لئے جاتے ہیں تو دماغ بوجھل نہیں ہوتا. اگر آپ مناسب وقت سے ہٹ کر کسی وقت لڑائی کریں گے تو اس کے اثرات تادیر آپ کے ذہن میں قائم رہیں گے اور قوی امکان ہے کہ رات کو سوتے وقت بھی آپ یہ الجھنیں اپنے ساتھ ہی لے کر سوئیں گے.
..


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

Daily QUDRAT is an UrduLanguage Daily Newspaper. Daily QUDRAT is The Largest circulated Newspaper of Balochistan .

رابطے میں رہیں

Copyright © 2017 Daily Qudrat.

To Top