بھارت میں کسمپرسی کی زندگی گزارنے والے ایک افغان شہری نے اپنی خوبصورتی کو ہتھیار بنا کر ایسی لوٹ مچا دی کہ پورے ملک میں ہنگامہ برپا ہو گیا

نئی دلی (قدرت روزنامہ07فروری2017) افغان پناہ گزینوں کے جرائم یا شدت پسندی میں ملوث ہونے کا تذکرہ تو اکثر سننے میں آتا ہے لیکن بھارت میں کسمپرسی کی زندگی گزارنے والے ایک افغان شہری نے اپنی خوبصورتی کو ہتھیار بنا کر ایسی لوٹ مچا دی کہ پورے ملک میں ہنگامہ برپا ہو گیا. اخبار ٹائمز آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق 34 سالہ حمید اللہ ایک سادہ لوح شخص تھا لیکن رنویر سنگھ کی ایک فلم دیکھنے کے بعد اس میں حیرت انگیز تبدیلی آ گئی.

اسے دلی شہر میں دو وقت کی روٹی بھی نصیب نہیں تھی لیکن فلم میں رنویر کے ہوس پرست کردار کو دیکھ کر اسے خیال آیا کہ کیوں نہ اپنی اچھی شکل و صورت کو کچھ کمائی کرنے کے لئے استعمال کرے. اس نے ایک صنعتکار، بینکر، کارپوریٹ وکیل اور کامیاب بزنس مین جیسے بہروپ بھر کر غیر شادی شدہ مالدار خواتین کو اپنے جال میں پھنسانے کا سلسلہ شروع کردیا. وہ خواتین سے رابطے کے لئے سوشل میڈیا کا استعمال کرتا تھا اور اکثر ہوٹلوں اور نائٹ کلبوں میں بھی جاتا تھا. اس کا شکار بننے والی خواتین کی بڑی تعداد کا تعلق امریکہ سے ہے، جن میں سے ایک نے اس پر 86 ہزار ڈالر (تقریباً 86 لاکھ پاکستانی روپے) لٹا دئیے.

 جوائنٹ کمشنر (کرائم)روندرا یادیو نے بتایا کہ متعدد خواتین کی جانب سے پولیس کو شکایات موصول ہونے کے بعد ملزم کا سراغ لگالیا گیا. اسے ہفتے کی رات بھارتی دارالحکومت میں حیات ہوٹل کے قریب گرفتار کیا گیا. پولیس کے مطابق حمید اللہ نے درجنوں مالدار خواتین کو لوٹا اور لوٹ کے مال سے بھاری مقدار میں جیولری، ایک مہنگی گاڑی اور قیمتی جائیداد خریدی. وہ 2011ءمیں سیاحتی ویزے پر بھارت آیا تھا، جسے بعدازاں میڈیکل ویزے میں تبدیل کروالیا.
..


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top