ماﺅ باغیوں سے لڑنے جانے والے بھارتی فوج کے 59 کمانڈوز راستے میں ہی لاپتہ

نئی دلی(قدرت روزنامہ07فروری2017)بھارتی فوج کے جنگل میں لڑنے کے ماہر درجنوں نئے کمانڈوزاپنے کیریئر کے پہلے محاصرے کیلئے جاتے ہوئے راستے میں ہی لا پتہ ہوگئے جس کے بعد پورے انڈیا میں بھونچال آگیا ، واقعے کی بڑے پیمانے پر تحقیقات شروع کردی گئی ہیں. عرب نیوز کی رپورٹ کے مطابق کمانڈوز ایک ٹرین کے ذریعے انڈیا کی مشرقی ریاست ’بہار ‘ جا رہے تھے جہاں انہوں نے ماﺅ باغیوں کا محاصرہ کرنا تھا لیکن وہ راستے میں ہی لاپتہ ہوگئے.

دستے کے کمانڈر کا کہنا ہے کہ راستے میں ایک جگہ پر ٹرین رکی تو یہ تمام کمانڈوز مجھے اطلاع دیے بغیر ہی کہیں چلے گئے. کمانڈر کا یہ بیان سامنے آنے کے بعد پورے انڈیا میں ہنگامہ برپا ہوگیا اور طرح طرح کے سوالات کھڑے ہوگئے ہیں.انڈیا میں سوال اٹھ رہے ہیں کہ آیا یہ پروفیشنل کمانڈوز جان بوجھ کر غائب ہوئے ہیں یا انہیں ماﺅ باغیوں نے اغوا کیا ہے.

 انڈین پیر املٹری فورس جس سے لاپتہ ہونے والے کمانڈوز کا تعلق ہے کا کہنا ہے کہ بہار جاتے ہوئے راستے میں 59 کمانڈوز غائب ہوئے ہیں جس کی تحقیقات کی جا رہی ہیں اور اس بارے میں کچھ بھی کہنا قبل از وقت ہوگا.
 واضح رہے کہ ماﺅ باغی چھتیس گڑھ، اوڈیشا، بہار ، جھاڑ کھنڈ اور آندھرا پردیش کے جنگلات میں پوری طرح متحرک ہیں اور انہوں نے اپنی کارروائیوں کے ذریعے بھارتی سیکیورٹی فورسز کا جینا دو بھر کیا ہوا ہے. امکان ظاہر کیا جا رہا ہے کہ ان کمانڈوز کو انہی باغیوں نے اغوا کیا ہے.
..


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top