داعش کے کارکن کی بیگم کی ذاتی ڈائری منظر عام پر آگئی

لندن (قدرت روزنامہ03فروري2017)شدت پسند تنظیم داعش میں جہاں کئی ممالک کے جنگجو شامل ہیں وہیں مغربی ممالک کی بہت سی خواتین بھی اس کا حصہ ہیں. ان میں سے اکثر خواتین جنگجوﺅں کی دلہنیں بننے کے لئے اپنی مرضی سے شام گئیں، لیکن پھر وہاں ان کے ساتھ جو سلوک ہوا وہ بیان سے باہر ہے.

ام ابراہیم کے نام سے منظر عام پر آنے والی ایک برطانوی خاتون بھی ایک ایسی ہی مثال ہے ، جو داعش کے ایک جنگجو کے عشق میں مبتلاءہونے کے بعد شام گئی. وہ شام میں قیام کے دوران روزمرہ حالات کو ایک ڈائری کی شکل میں محفوظ کرتی رہی. اس ڈائری کے حیرت انگیز مندرجات حال ہی میں دنیا کے سامنے آئے ہیں.
ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے مطابق خاتون نے اپنی ڈائری میں انکشاف کیا کہ وہ داعش کے ایک جنگجو کی دلہن بننے کے لئے برطانیہ سے فرار ہوئی. شام میں گزرے وقت کے دوران ایک دن کا احوال بیان کرتے ہوئے وہ لکھتی ہے ”ابھی یہاں ایک فضائی حملہ ہوا ہے. روس کے اس حملے میں 100 لوگ مارے گئے ہیں اور گلیوں میں عورتوں اور بچوں کی لاشیں پڑی ہیں. اس ہلاکت خیزی نے میرا دل نفرت سے بھر دیا ہے .“
n2
ام ابراہیم اپنی ڈائری روزانہ کی بنیاد پر تحریر کرتی رہی، جس میں وہ برطانوی خواتین کو دعوت دیتی رہی کہ وہ بھی داعش کا حصہ بننے کے لئے شام پہنچیں. داعش سے تعلق رکھنے والا اس کا جنگجو خاوند عمران ترکی اور برطانیہ کے دوران اکثر سفر کرتا رہتا تھا. اس نے ام ابراہیم کو شام پہنچانے کے لئے بہترین راستہ تلاش کرنے پر کئی مہینے کام کیا، اور بالآخر اسے اپنی دلہن بنا کر شام لے جانے میں کامیاب ہو گیا. وہ دونوں شام جانے سے پہلے چار ماہ تک ترکی میں بھی رہے.
..


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top