چین کی امریکہ کے ساتھ جنگ اب ایک حقیقت ہے، اور چینی فوج کے سے بڑے اور خوفناک ہتھیار کو بحرالکاہل میں اتارنے کا فیصلہ

بیجنگ (قدرت روزنامہ02فروري2017) چین کی جانب سے گزشتہ ہفتے ایک بیان میں کہا گیا کہ امریکہ کے ساتھ جنگ اب ایک حقیقت ہے، اور چینی فوج کے سے بڑے اور خوفناک ہتھیار کو بحرالکاہل میں اتارنے کا فیصلہ کر کے یہ بھی واضح کر دیا گیا ہے کہ یہ جنگ اب کسی بھی وقت شروع ہو سکتی ہے. چین کی جانب سے جس تباہ کن ہتھیار کو سمندر میں اتارنے کا فیصلہ کیا گیا ہے وہ اس کا اپنا تیار کردہ پہلاطیار بردار جہاز ہے.

یہ طیارہ بردار جہاز ڈالیان کی بندرگاہ پر تکمیل کے آخری مراحل میں ہے اور متوقع طور پر اگلے چند ماہ کے دوران بحیرہ جنوبی چین کی جانب روانہ کردیا جائے گا.

 چین کے سرکاری میڈیا کا کہنا ہے کہ شان ڈونگ طیارہ بردار جہاز بحیرہ جنوبی چین کی پیچیدہ صورتحال سے نمٹنے کے لئے تعینات کیا جائے گا. یہ چینی بحریہ کا سب سے بڑا بحری جنگی جہاز ہوگا جس پر فائٹر طیاروں کے متعدد سکواڈرن تعینات کئے جائیں گے. واضح رہے کہ صرف چین کی جانب سے ہی جنگ کی تیاریاں جاری نہیں ہیں بلکہ دوسری جانب امریکہ نے بھی بحرالکاہل کو ہتھیاروں سے بھردیا ہے. اس کے بحری جہاز، جنگی ہوائی جہاز اور میزائل سسٹم بحرالکاہل میں پھیلے ہوئے درجنوں اڈوں پر پہنچ چکے ہیں، اور دفاعی تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ اس خطرناک صورتحال میں دنیا کی دو بڑی طاقتوں کے درمیان جنگ واقعی ایک حقیقت کا روپ دھارتی نظر آرہی ہے.
..


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top