پاکستانی لڑکی سے شادی کرنے کیلئے بھارتی لڑکے نے ایسی قربانی دیدی جس کی تاریخ میں کوئی مثال نہیں ملتی

دبئی (قدرت روزنامہ02فروري2017)مختلف تہذیبوں سے تعلق رکھنے والے مرد و خواتین کے درمیان شادی کرنا ایک مشکل عمل ہوتا ہے اور اگر شادی کا معاملہ پاکستان اور بھارت کے لڑکا لڑکی کے درمیا ن ہو تو یہ معاملہ مزید مشکل ہو جاتا ہے. اپنے خاندان اور معاشرے سے ایسی ہی مشکلات کا سامنا ایک پاک بھارت جوڑے کو اس وقت کرنا پڑا جب انہوں نے آپس میں شادی کا فیصلہ کیالیکن بالآخر اہلخانہ نے ہتھیار ڈال دیئے اور دونوں کی خوشیوں میں شرکت بھی کی .

عرب میڈیا کے مطابق پاکستانی لڑکی ہدیٰ کا تعلق جین مذہب سے تھا جبکہ بھارت کے لڑکا منیت ہندو ہے.دونوں کے درمیان تعلقات کا آغاز چار سال پہلے ہوا جس کے کچھ عرصہ بعد جوڑے نے شادی کا فیصلہ کر لیا.پاک بھارت جوڑے کے خاندانوں نے شروع میں تو اس رشتے سے انکار کیا کیونکہ لڑکی کے خاندان میں روایت ہے کہ کوئی شخص خاندان سے باہر شادی نہیں کرسکتا لیکن پھر ہدیٰ کے گھر والوں نے ہتھیارڈال دیے .شادی کے موقع پر ہدیٰ کاکہناتھاکہ رشتے سے انکار کی وجہ صرف دوسرا مذہب ہونا تھاجبکہ دولہا کے خاندان نے بھی اسے الٹی میٹم دیدیا اور کہاکہ یا تو لڑکی کا انتخاب کرلیں یا پھر گھرچھوڑدیںاور پھر منیت نے اپنا گھر چھوڑدیا.

n9
اہلخانہ سے مایوس جوڑے نے شادی کے دن ایک ویڈیو پیغام میں اپنی کہانی دنیا کے سامنے بیان کردی اور اپنے مشکل دنوں کے بارے میں بتاتے ہوئے ہدیٰ نے کہاکہ میں ڈر کی وجہ سے راتوں کو سونہیں سکتی تھی ، مجھے نہیں پتہ تھا یہ سب کچھ کیسے ہوگا، اہلخانہ کا ردعمل کیا ہوگا.دوسری طرف منیب نے بتایاکہ کم ازکم مجھے یہ امید تھی کہ وہ ہم دونوں کے ایک دوسرے کے بارے میں جذبات کے بارے میں ضرور سوچیں گے جو کہ بہت مضبوط تھے اور امید تھی کہ وہ مجھے واپس بلائیں گے .
بالآخر خوش قسمتی سے خاندان والے بھی راضی ہوگئے اور دبئی کے ساحل پر اس پاک بھارت جوڑے کی شادی انجام پائی .ویڈیو دیکھئے .
..


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top