ایک واقعہ ایسا جس نے ’جنٹل مین گیم‘ کرکٹ کے دامن کو داغدار کردیا

16

اسلام آباد (قدرت روزنامہ02فروري2017)ٹیسٹ کرکٹ سے ون ڈے انٹرنیشنل اور پھر ٹی20 کرکٹ کی مقبولیت کے ساتھ کرکٹ کا سفر انتہائی تیزی سے جاری ہے جہاں نت نئے ریکارڈز کے ساتھ ساتھ عجیب و غریب واقعات بھی کرکٹ کی تاریخ کا اٹوٹ حصہ ہیں لیکن انہیں میں ایک واقعہ ایسا بھی جس نے ’جنٹل مین گیم‘ کرکٹ کے دامن کو داغدار کردیا. کرکٹ کی تاریخ میں بال ٹیمپرنگ ، میچ فکسنگ سمیت کئی غیرقانونی اسکینڈلز سامنے آئے لیکن کرکٹ کے قانونی دائرہ کار میں رہتے ہوئے آج تک ’انڈر آرم بال‘ جیسا واقعہ آج تک پیش آیا جو اب تک اسپرٹ آف کرکٹ کی نفی تصور کیا جاتا ہے اور رہتی دنیا تک اس کی مثال دی جاتی رہے گی.

جی ہاں، 1981 میں ہونے والا بینسن اینڈ ہیجز کپ کا بیسٹ آف فائیو فائنلز کا تیسرا اور متنازع فائنل مقابلہ آج بھی کیوی شائقین کو یاد ہے جب یکم فروری کو ہونے والے ایک سنسنی خیز مقابلے میں آسٹریلیا نے اسپورٹس مین اسپرٹ کی خلاف ورزی کرتے ہوئے میچ میں فتح حاصل کی تھی.

اس سیریز میں ہندوستان، آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کی ٹیمیں شریک تھیں اور زیادہ میچز جیتنے پر نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا بیسٹ آف فائیو فائنل کھیلنے کی حقدار قرار پائیں. ابتدائی دو فائنل مقابلوں میں سے دونوں ٹیموں نے ایک ایک فتح حاصل کی.

اس سلسلے کا تیسرا فائنل میلبرن میں یکم فروری 1981 کو کھیلا گیا اور تاریخ میں امر ہو گیا.

آسٹریلیا نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے مقررہ 50 اوورز میں 235 رنز بنائے، کپتان گریگ چیپل نے 90 جبکہ گریم وُڈ نے 72 رنز کی اننگ کھیلی. جواب میں نیوزی لینڈ کی ٹیم نے ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے بروس ایڈگر کی شاندار ناقابل شکست سنچری کی بدولت 49 اوورز میں 221 رنز بنا لیے اور اسے میچ میں فتح کے لیے 15 رنز درکار تھے.

گریگ چیپل نے اس موقع پر گیند اپنے بھائی ٹریور چیپل کو تھمائی جن کی پہلی ہی گیند پر رچرڈ ہیڈلی نے چوکا مار دیا لیکن دوسری گیند پر وہ ایل بی ڈبلیو ہو گئے. تیسری اور چوتھی گیند پر نئے آنے والے بلے باز برائن ای این اسمتھ نے دو دو رنز بٹورے لیکن پانچویں گیند پر وہ بھی پویلین لوٹ گئے. اس موقع پر نیوزی لینڈ کی آٹھ وکٹیں گر چکی تھیں اور اسے آخری گیند پر فتح کے لیے سات جبکہ میچ ٹائی کرنے کے لیے چھ رنز درکار تھے یعنی آسٹریلین ٹیم میچ ہار نہیں سکتی تھی.

لیکن اس کے باوجود گریگ نے اپنے بھائی ٹریور چیپل سے ’انڈر آرم‘ گیند کرانے کو کہا، اس وقت کرکٹ کے قوانین میں یہ گیند کرانے کی اجازت تھی. یقیناً اس پر کوئی بھی بلے باز چھکا تو نہیں مار سکتا تھا، مک کیچنی نے اس گیند کو آرام سے روک لیا اور اس طرح آسٹریلیا کو میچ میں چھ رنز سے فتح ملی لیکن ساتھ ساتھ یہ میچ بھی امر ہو گیا.

بعد میں انڈر آرم گیند کو کرکٹ میں غیر قانونی قرار دے دیا گیا لیکن کیوی شائقین آج تک اس میچ کی شکست کو نہیں بھول سکے جو یقیناً کھیل کی روح اور اسپورٹس مین اسپرٹ کے منافی تھا :-

..


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

Daily QUDRAT is an UrduLanguage Daily Newspaper. Daily QUDRAT is The Largest circulated Newspaper of Balochistan .

رابطے میں رہیں

Copyright © 2017 Daily Qudrat.

To Top