اکبر کی شادی

35

(قدرت روزنامہ17-فروری-2017)شہنشاہ اکبر اور اس کی ملکہ اکثر معمولی معاملات میں جھگڑتے رہے تھے. ایک دن جب کہ وہ جھگڑ رہے تھے ملکہ نے پوچھا کہ :.

’’ تم کو ثابت کرنا ہو گا کہ تم واقعی مجھ سے پیار کرتے ہو جس طرح کہ میں چاہتی ہوں تم بیر بل کو اس کی نوکری سے بر خاست کر دو اور میرے بھائی شیر خاں کو اس کی جگہ پر لگا دو. ‘‘ شہنشاہ نے بہت کوششیں کی ملکہ کو سمجھانے کی کہ یہ ممکن نہیں بیر بل کو اس کی نوکری سے ہٹانا مر ملکہ بضد تھی. اس لیے اکبر نے کہا کہ :. ’’ تم خود بیر بل سے بات کرو. ‘‘ ٍبیگم خوش ہو گی، اور اس نے کہا کہ :. میرے ذہن میں ایک خیال آیا ہے. کل ہم دونوں آپس میں الجھ پڑیں گے. پھر تم بیر بل کو بتاؤ کہ:. ’’ اگر ملکہ مجھ سے معافی طلب نہ کرے تو میں تمہیں نوکری سے نکال دوں گا. اس طرح الزام تمہارے اوپر نہیں آئے گا.‘‘ اگلے روز منصوبے کے مطابق شہنشاہ اور ملکہ نے آپس میں جھگڑنا شروع کر دیا. شہنشاہ غصے سے نیلا پیلا ہو رہا تھا. ایک دوسری جگہ پر قیام کے لیے چلا گیا. جب بیر بل شہنشاہ سے ملنے کے لیے گیا تو شہنشاہ نے کہا کہ :. ’’ بیر بل ! ملکہ کو مجھ سے معافی طلب کرنا ہو گی. ‘‘ بصورت دیگر میں تمہیں موجودہ نوکری سے ہٹا دوں گا.ُ ُ بیر بل شہنشاہ سے یہ سن کر اس کے دربار سے باہر نکل آیا اور محافظ کو اس نے بلایا. اس نے کچھ اس کے کان میں سر گوشی کی پھر اس نے ملکہ کے ساتھ باتیں کرنی شروع کیں. اس نے اس کو یہ خیال (لائحہ عمل ) دیا جیسا کہ اگر وہ کچھ شہنشاہ کے جھگڑے کے بارے میں نہیں جانتا. تھوڑی دیر ک ے بعد بیر بل کی ہدایات کے مطابق محافظ آیا اور اس سے کہا کہ :. مہاراج کہہ رہا ہے کہ ہر کام منصوبے کے مطابق (واقع) رونما ہو چکا ہے. اب وہ بڑا بے چین ہو چکا ہے اور تمہیں وہ چاہتا ہے فوری طور پر اس شخص کے ساتھ لائے. بیر بل فوری طور پر اٹھ کھڑا ہوا روانہ ہونے کے لیے ملکہ نے دریافت کیا کہ :. ’’ بیر بل کیا معاملہ ہے. ‘‘ بیر بل نے جواب دیا کہ :. معذرت خوا ہوں. بلند مقام. لیکن مجھے اس آدمی کی شناخت کرانے کی اجازت نہیں ہے اور وہ چلا گیا. اب ملکہ نے بہت زیادہ بے چینی محسوس کی . نا خوشگوار خیالات اس کے ذہن میں آنے شروع ہوئے. اس نے قیاس کیا کہ :. ’’ کوئی مشکوک واقع ظہور پذیر ہو چکا ہے. ‘‘ اس نے اپنے آپ سے خیال کیا کہ :. ’’ وہ آدمی یقینی طور پر کوئی دوسری عورت ہو سکتی ہے ؟ اور شہنشاہ اس سے شادی کرنے والا ہے. ‘‘ میرے آقا ! اس سے میری خاندانی زندگی تباہ ہو جائے گ اس خواہش کے ساتھ کہ میرے بھائی کو وزیر بنایا جائے. ‘‘ وہ شہنشاہ کے پاس گی اور اس نے گھٹنے ٹیک کر اس کے قدموں میں رونا شروع کر دیا. تو شہنشاہ نے دریافت کیا کہ :. ’’ کیا معاملہ ہے. ‘‘ ملکہ نے آنسو بھری آنکھوں سے جواب دیا کہ :. ’’ براہ کرم مجھے معاف فرمائیں. ساری میری غلطی تھی مگر آپ براہ کرم دوسری شادی نہ کریں. ‘‘ شہنشاہ یہ سن کر بڑا حیران ہوا. اس نے پوچھا کہ :. کہ تمہیں کس نے بتایا کہ میں دوبارہ شادی کر رہا ہوں. ‘‘ملکہ نے وہ سب کچھ بیان کر دیا جو کچھ بیر بل نے اسے کہا تھا . شہنشاہ سن کر خوب ہنسا اور اس نے کہا کہ :. بیر بل نے یقیناًً تمہیں بیوقوف بنایا ہو گا یہ بیر بل کو مات کرنا آسان نہیں نہیں ہے اب تم کم از کم سمجھ چکی ہو؟ ملکہ نے کہا کہ :. ’’ ہاں اور مسکرائی .‘‘..


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

Daily QUDRAT is an UrduLanguage Daily Newspaper. Daily QUDRAT is The Largest circulated Newspaper of Balochistan .

رابطے میں رہیں

Copyright © 2017 Daily Qudrat.

To Top