کائنات کے بارے میں قرآن کے وہ دعوے جنہیں آج کے سائنسدانوں نے سچ ثابت کر دیا

اسلام آباد (قدرت روزنامہ14فروری2017)کائنات کے بارے میں قرآن کے وہ دعوے جنہیں آج کے سائنسدانوں نے سچ ثابت کر دیاصدیوں پہلے قرآن حکیم نے فلکیات کے بارے میں جو دعوے کئے تھے اور جن میں رات، دن، سورج، چاند اور ستاروں کو اللہ تعالیٰ کے حکم سے انسانوں کے لئے مسخر کرنے کا مژدہ سنایا گیا تھا اور یہ بھی کہا گیا تھا کہ اجرامِ فلکی خلاء میں تیر رہے ہیں اور محوگرش ہیں، آج سائنس نے اس کو تسلیم کرلیا ہے اور یہ بھی مانتی ہے کہ کسی دن اجرام فلکی کی قوت وکشش بگڑ جانے سے پوری دنیا برباد اور مخلوقات ہلاک ہوسکتی ہیں وہ قرآن کے الفاظ میں ’’روزقیامت‘‘ ہوگا جس کی پیشن گوئی اور منظر کشی سورہ ابراہیم ، سورہ انبیاء اور سورہ دخان میں کی گئی ہے. قرآن مجید میں سورج کو ایک روش چراغ اور چاند کو نور سے تعبیر کیا گیا ہے، سورہ والشمس میں وضاحت کے ساتھ ارشاد باری تعالیٰ ہے ’’اور قسم ہے سورج کی جو خوب روشن ہے اور چاند کی جو اس کے پیچھے آتا ہے‘‘ یعنی روشن تو سورج ہے اور چاند کی روشنی اس سے مستعار ہے ، یہی جدید سائنس بھی کہتی ہے.

انسان نے آج خلاء کی تسخیر کرلی اور چاند تک اس کے قدموں کی دھمک محسوس ہورہی ہے جو دوسری اقوام کے لئے باعث حیرت ہوسکتا ہے لیکن حاملین قرآن کے لئے نہیں کیونکہ اس کے امکانات کے بارے میں قرآن پاک میں واضح اشارے موجود ہیں. سورہ رحمان میں انسانوں اور جنوں کے گروہوں کو مخاطب کرکے کہا گیا ہے کہ ’’اگر تم زمین وآسمان کے کناروں سے نکل جانا چاہتے ہو تو نکل جاؤ لیکن کسی زور کے بغیر نہیں نکل سکتے، مفسرین نے اس آیت کے لفظ ’’سلطان‘‘ کی تصریح زور، علم اور ادراک سے کی ہے، خلائی سائنس کے ادراک سے ہی انسان کو آج چاند تک پہونچنے کا موقع میسر آیا ہے. قرآن پاک کی ’’سورہ فرقان‘‘ میں دو دریاؤں کے مختلف النوع پانی کے ملنے کے باوجود اس کے ذائقہ وہیئت کے مختلف ہونے اور ان کے درمیان ایک قوی حجاب کا جو انکشاف کیا گیا ہے فرانسیسی سائنس داں کیسٹواپنے بحری سفر کے دوران بحر احمر اور بحر روم کے سنگم میں اس کا مشاہدہ کرکے قرآن کی حقانیت پر ایمان لاچکا ہے. آئن اسٹائن کے نظریہ اضافت کے مطابق کسی شئے کی رفتار روشنی سے زیادہ یا اس کے برابر نہیں ہوسکتی اور اگر ایسا ہوجائے تو اس کے لئے وقت ٹھہر جائے گا اور اس کی مادیت اور اس کی توانائی برابر ہوجائے گی، روشنی کے برابر رفتار ۳ لاکھ کلو میٹر فی سیکنڈحاصل کرلینے کے بعد کسی چیز کو لاکھوں کروڑ وکلومیٹر کا فاصلہ طے کرنے میں چند لمحوں کا وقت لگے گا اور کیونکہ اسلام میں روشنی یا نور کو ایک اہم مقام حاصل ہے لہذا حضور ﷺ کا واقعہ معراج اب تعجب خیز نہیں رہ گیا. یہ اور اسی طرح کے سینکڑوں واقعات وانکشافات ہیں خواہ ان کا تعلق کائنات کی پیدائش سے ہو یا فرعون کی نعش کی قدامت سے، علم حیات سے ہو یا علم طبعیات سے یہ صحیفہ آسمانی ان کے بارے میں ایک جامع اور مکمل تصور پیش کرتا ہے، جو ثابت کرنے کے لئے کافی ہے کہ قرآن حکیم کلامِ الٰہی ہے اور یہ کائنات اس کی تخلیق ہے جب کہ سائنس اس کائنات کے اصولوں کو مادی طور پر سمجھنے کا نام ہے اس لئے سائنس کی صحیح اور مسلمہ چیزوں اور قرآن کی تفسیر میں تضاد کا کوئی سوال ہی پیدا نہیں ہوتا کیونکہ مالکِ حقیقی کے قول وفعل میں تضاد نہیں ہوسکتا. تضاد وغلط فہمی حقیقت میں ہمارے علم ناقص کا نتیجہ ہے

..


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

Daily QUDRAT is an UrduLanguage Daily Newspaper. Daily QUDRAT is The Largest circulated Newspaper of Balochistan .

رابطے میں رہیں

Copyright © 2017 Daily Qudrat.

To Top