پہلے ’’انا اللہ و انا الیہ راجعون‘‘ کہا تھا،آج باقاعدہ تدفین ہو گئی : ڈاکٹر طاہر القادری

یہاں 100لوگوں کو گولیاں مار دی جائیں تو فیصلہ نہیں آتا،سات سمندر پار کی کرپشن کا کیا آئے گا،کور کمیٹی کے اجلاس سے خطاب لاہور( آن لائن) پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر محمد طاہر القادری نے عوامی تحریک کی سنٹرل کور کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ معاملہ جہاں سے چلا وہیں آ گیا. طہارت کے سر ٹیفکیٹ کی کالک جے آئی ٹی کے منہ پر ملی جائے گی.

بنچ نے جو سوالات دہرائے انکے جواب لینے تو وکلاء عدالت آئے تھے .بہت پہلے کہا تھا ’’انا اللہ و انا الیہ راجعون‘‘ آج پانامہ کی با ضابطہ تدفین ہو گئی ، قوم فاتحہ پڑھے اور صبر کرے ،یہاں پر 100لوگوں کو گولیاں مار دی جائیں فیصلہ تو کیا رپورٹ بھی نہیں آتی یہ تو سات سمندر پار کی کرپشن ہے. عوام کو کسی ادارے سے نہیں سڑکوں پر نکلنے سے ریلیف ملے گا . انہوں نے کہا کہ فیصلہ اس اعتبار سے تاریخی ہے کہ جنہوں نے رٹ کی وہ بھی خوش ہیں اور جن کے خلاف رٹ ہوئی وہ بھی مٹھائیاں بانٹ رہے ہیں . ایک سال تک قوم کو ٹرک کی بتی کے پیچھے لگائے رکھا گیا ،اب 540 صفحات کے فیصلے کی ایک طویل عرصہ تشریح ہوتی رہے گی ، مگر قوم کا خزانہ لوٹنے والوں کو کچھ نہیں ہو گا.بنچ کے معزز اراکین نے بڑے محتاط انداز سے کہاکہ لندن فلیٹس کی جو منی ٹریل قطری خط کے حوالے سے پیش کی گئی اس سے متفق نہیں ،اگر بنچ منی ٹریل سے مطمئن نہیں تو پھر فیصلہ تو آ گیا ، جے آئی ٹی نے کس چیز کی تحقیق کرنی ہے وزیر اعظم نے واشگاف انداز میں کہہ دیا تھا کہ میں فیصلے سننے نہیں آیا .انہوں نے کہاکہ جن عہدیداروں کا وزیر اعظم اپنے ہاتھوں سے تقرر کرتے ہیں وہ ملازم وزیر اعظم کو سلیوٹ کریں گے یا وزیر اعظم سے سوال و جواب کریں گے ...


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top