’’جسے اللہ رکھے اسے کون چکھے‘‘

لاہور (قدرت روزنامہ14فروری2017)گذشتہ رات چئیرنگ کراس مال روڈ پر دھماکے کے نتیجے میں13 افراد شہید جبکہ 70 افراد زخمی ہوئے . چئیرنگ کراس پر فارما سوٹیکل کمپنیوں کے احتجاج کے دوران ایک فون کال نے وہاں موجود ایک شخص کی جان بچا لی.

شاہد ملک نامی شخص احتجاج میں شریک تھا کہ اسے ایک فون کال موصول ہوئی لیکن احتجاج کی جگہ

شور زیادہ ہونے کے سبب شاہد اپنا فون سننے کے لیے جائے وقوعہ سے تھوڑا ہٹ گیا.شاہد نے بتایا کہ میں بالکل دھماکے کی جگہ پر کھڑا تھا جب مجھے ایک فون کال موصول ہوئی اور میں فون سننے کے لیے تھوڑا ہٹا ہی تھا کہ دھماکے کا کچھ مواد میری ٹانگوں میں آ کر لگا. میو اسپتال میں زیر علاج شاہد ملک کا کہنا تھا کہ میں دھماکے کے وقت بالکل سامنے والی جگہ پرکھڑا تھا لیکن یہ کہنا مشکل ہے کہ دھماکہ خود کُش تھا یا نہیں. شاہد کاکہنا تھا کہ میں دھماکے کے بعد کے مناظر کو کبھی نہیں بھول سکتا.میں نے موٹرسائیکل پر موجود ایک فیملی کو دھماکے کے فوری بعد خون میں لت پت دیکھا.

..


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top