خودکش حملہ آور اکیلا نہیں بلکہ تین ساتھیوں سمیت پنجاب اسمبلی کے سامنے پھرتا رہا جو دھماکے سے قبل فرار ہو گئے

لاہور(قدرت روزنامہ14فروری 2017)چیئرنگ کراس دھماکے کی ایف آئی آر میں انکشاف کیا گیا ہے کہ خودکش حملہ آور اکیلا نہیں بلکہ تین ساتھیوں سمیت پنجاب اسمبلی کے سامنے پھرتا رہا جو دھماکے سے قبل فرار ہو گئے.اے آر وائے نیوز کے مطابق گزشتہ شام 6بجکر 10منٹ پر پنجاب اسمبلی کے سامنے ہونے والے خودکش حملے کا مقدمہ تھانہ سی ٹی ڈی بیدیاں روڈ میں درج کر لیا گیا ہے جس میں قتل ، اقدام قتل اور دہشت گردی ایکٹ کے تحت دفعات شامل کی گئی ہیں جبکہ ایف آئی آرنمبر 6/17 میں انکشاف ہوا ہے کہ خود کش حملہ آور تنہا نہیں آیا بلکہ اس کے ساتھ تین ساتھی بھی تھے جو واقعے کے بعد فرار ہوگئے تاہم ان کی تلاش جاری ہے.

ان حملہ آوروں کے فرارہونے کی خبر نے شہریوں کو ایک بار پھر نئے خطرے سے دوچارکر دیا ہے کیونکہ اگر یہ گرفتار نہ ہوئے تو کسی بھی جگہ پر کارروائیاں کر سکتے ہیں. دوسری جانب تحقیقاتی اداروں نے خودکش حملہ آور کے جبڑے، دانت اور دیگر اعضاءسمیت شواہد اکھٹے کرلئے ہیں اور جیوفینسگ سے بھی مددحاصل کی جا رہی ہے تاہم فرانزک رپورٹ کے بعد اہم حقائق سامنے آنے کا امکان ہے. یاد رہے کہ خودکش حملے میں ڈی آئی جی ٹریفک اور ایس ایس پی آپریشن سمیت 13افراد شہید ہوئے ہیں .دھماکہ اس وقت کیا گیا جب پنجاب اسمبلی کے سامنے چیئرنگ کراس پر فارما مینوفیکچرز اور کیمسٹس کا احتجاج جاری تھا جہاں پولیس حکام مذاکرات کیلئے موجود تھے...


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top