میں نے ہیرے جیسی بیٹی کو کھو دیا، بیٹا شدید زخمی ہے والدہ کی گفتگو

لاہور (قدرت روزنامہ14فروری 2017) گذشتہ رات سانحہ چئیرنگ کراس میں ایک شہری لڑکی فاطمہ بھی شہید ہوئی . فاطمہ کے اہل خانہ نے بتایا کہ فاطمہ کی اگلے ماہ شادی تھی .

نجی ٹی وی چینل سے گفتگو میں فاطمہ کی والدہ نے بتایا کہ فاطمہ بہن بھائیوں میں سب سے بڑی تھی اور اس کا منگیتر امریکہ سے آ رہا تھا. فاطمہ کی ایک ماہ بعد شادی تھی. فاطمہ کی والدہ نے بتایا کہ فاطمہ اپنے اٹھارہ سالہ بھائی بلال کے ساتھ شاپنگ کرنے مال روڈ گئی تھی.وہ کئی ماہ سے کہہ رہی تھی کہ چھوٹے بھائی کو سالگرہ کا تحفہ دینا ہے . جیسے ہی چھوٹا بھائی بلال اسکول سے آیا اس نے کہا کہ بلال تیار ہو جاﺅ میں کام کر کے فارغ ہو گئی ہوں. فاطمہ نے مجھ سے روٹی کا پوچھا اور پھر کہا کہ میرے لیے روٹی نہ بنائیں میں آ کر کھاﺅں گی.اسے اپنے 14 سالہ بھائی بلال کے لئے شاہ عالمی سے جوتے پسند کر رکھے تھے، وہی لینے کے لیے بلال کو لے کر مال روڈ چلی گئی.وہاں پہنچ کر بڑے بھائی کو بھی فون کیا کہ سجاد مجھے جوتے پسند ہیں تمہارے لیے بھی لے لوں؟ انہوں نے بتایا کہ فاطمہ نے ماس کمیونیکیشن کی..


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top