نوجوان پاکستانی لڑکی نے ایسی بات کہہ دی کہ ہر کسی کا منہ کھلا کا کھلا رہ گیا

لاہور(قدرت روزنامہ10فروری2017) سادہ سی بات ہے کہ محبت، عزت کی کوکھ سے جنم لیتی ہے. جو شخص آپ کی عزت نہیں کرتا، اس کے متعلق یہ گمان کرنا ہی عبث ہے کہ وہ آپ سے واقعی محبت کرتا ہو گا.

تاہم یہ سادہ بات انٹرنیٹ پر موجود کچھ سادہ لوح افراد، بالخصوص ان لڑکیوں کو سمجھ نہیں آتی جو کسی ان دیکھے شخص کی محبت میں گرفتار ہو کر انہیں اپنی قابل اعتراض تصاویر وغیرہ بھیج دیتے ہیں. پھر ذلت و رسوائی کا اک لامتناعی سلسلہ شروع ہو جاتا ہے جو اس تصویر بھیجے والے یا والی کو حرام موت کی طرف دھکیل کر ہی جان چھوڑتا ہے. انگریزی اخبار ایکسپریس ٹربیون نے ایک سلسلہ شروع کر رکھا ہے جس کا نام ”آسک اسد“ ہے. اس سلسلے کے تحت لوگ لائف کوچ، مشیر اور انسپائریشنل سپیکر اسد سے اپنی مشکلات کے حل دریافت کرتے ہیں. ایسی ہی ایک سادہ لوح لڑکی نے اسد کو سوال بھیجا ہے کہ ”میں 24سال کی لڑکی ہوں اور اپنے ایک فیس بک فرینڈ سے محبت میں گرفتار ہو چکی ہوں. ہم ایک دوسرے سے کبھی نہیں ملے. وہ پاکستانی ہے لیکن اس وقت بیرون ملک مقیم ہے. وہ کہتا ہے کہ وہ مجھ سے بہت محبت کرتا ہے. وہ اکثر مجھ سے میری برہنہ تصاویر مانگتا ہے لیکن میں ایک مذہبی گھرانے سے تعلق رکھتی ہوں اور مجھے یہ مناسب نہیں لگتا. آپ میری مدد کریں کہ مجھے کیا کرنا چاہیے.“

 اسد نے اس لڑکی کو جواب میں لکھا ہے کہ ”اس لڑکے کو یا کسی بھی شخص کو کبھی بھی اپنی قابل اعتراض تصاویر مت بھیجنا، اگر ایسا کرو گی تو تمہارے ہاتھ پچھتاوے کے سوا کچھ ہاتھ نہ آئے گا.وہ تم سے بالکل محبت نہیں کرتا، محبت تو ایک طرف وہ تمہاری عزت بھی نہیں کرتا. وہ صرف تمہیں اپنی ہوس کا نشانہ بنانا چاہتا ہے اور اس کی یہ محبت عارضی اور وقت گزاری کے لیے ہے. اگر تم نے ایسا کیا تو، جیسا کہ اس کے روئیے سے ظاہر ہو رہا ہے، وہ تمہاری تصاویر اپنے دوستوں کے ساتھ شیئر کرے گا یا انٹرنیٹ پر ڈال دے گا. یا پھر وہ تمہیں بلیک میل کرکے رقم ہتھیائے گا اور جنسی فائدہ اٹھائے گا، اور اگر یہ کام ایک بار شروع ہو گیا تو کبھی ختم نہیں ہو گا. ایسے لوگوں کی بلیک میلنگ کبھی ختم نہیں ہوتی بلکہ شدید سے شدید تر ہوتی جاتی ہے. مجھے امید ہے تم کبھی ایسا نہیں کرو گی. یقین رکھو، ایک دن کوئی ایسا تمہیں ملے گا جو واقعی تم سے محبت کرتا ہو گا، وہ تم سے ایسی کوئی بیہودہ فرمائش نہیں کرے گا بلکہ تمہاری عزت کرے گا اور تمہاری شرم و حیاءکا رکھوالا ہو گا.“
..


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top