حکومتی کاتوجہ کامنتظر، ہری پورکانابینا ڈاکیا عظم وہمت کی عظیم مثال،تنخواہ صرف1040روپے

pic07

لاہور(قدرت روزنامہ06فروری2017) دنیامیں ایسے بھی لوگ جوعظم وہمت کی اپنی مثال آپ ہوتے ہیں،جن کی زندگی کامقصد صرف حلال کی روٹی کماناہوتاہے،اوریہ وہ لوگ ہیں،جواقبال کے اس شعرکاحق اداکرتے ہیں”اے طائرلاہوتی اس رزق سے موت اچھی،جس رزق سے آتی ہوپروازمیں کوتاہی“. نجی ٹی وی کی ایک رپورٹ‌کے مطابق ہری پورکے نواحی گاؤں‌کچھی میں بطورڈاکیاکام کرنے والانابینابزرگ حکومتی توجہ کامرہون منت ہپے،44سال سے لوگوں کے گھروں میں‌ڈاک پہنچانے کاکام کررہاہے،لیکن تنخواہ صرف 1000 روپے ہے.

اس نابینا ڈاکیا محمد انور کاکہناہے کہ "ہم گھر میں چار نابینا افراد تھے. میری والدہ نابینا تھیں اور میرا بھائی اور ایک بہن بھی دیکھنے کی نعمت سے محروم تھے. غربت کی وجہ سے مجھے بچپن سے ہی نوکری کے لیے گھر سے نکلنا پڑا. اس وقت میں مکمل نابینا نہیں تھا. بہت دھندلا سہی، مگر مجھے دکھائی دیتا تھا.محمد انور پیدائشی طور پر ہی بینائی سے محروم تھے.یہ معذوری ان کی والدہ اور دیگر بہن بھائیوں میں بھی موجود تھی. والد کے انتقال کے بعد گھر کی کفالت محمد انور کے سر پر آن پڑی تو انہوں نے اس معذوری کو اپنے راہ کی رکاوٹ نہ بننے دیا اور اللہ کے آسرے مزدوری کے لیے نکل کھڑے ہوئے. انہوں نے بتایا کہ"1973 میں مجھے پوسٹ مین کی نوکری 55 روپے تنخواہ ماہانہ پرملی، جس کے بعد ہمارے گھر میں کھانا روز پکنے لگا.اس کے کچھ عرصے بعد ہی میری والدہ نے میری شادی کر دی. میری اہلیہ نابینا نہیں تھی. اللہ نے مجھے 4 بچوں سے نوازا. ایک بیٹا اور تین بیٹیاں. میری اولاد الحمداللہ نارمل ہے...


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

Daily QUDRAT is an UrduLanguage Daily Newspaper. Daily QUDRAT is The Largest circulated Newspaper of Balochistan .

رابطے میں رہیں

Copyright © 2017 Daily Qudrat.

To Top