پاکستانی بہن بھائی جو ایڈز کا شکار ہوگئے کیونکہ ۔ ۔ ۔

اسلام آباد (قدرت روزنامہ16فروری2017)نجي روزنامه حسب معمول ایک مرتبہ پھر مجبورخاندان کی آواز بن گیاجن کے دونوں بچے ایڈز کا شکار ہوگئے ہیں اور اس کی وجہ درست طریقے سے جانچ پڑتال کے بغیر لگایاگیا خون بن گیا. روزنامہ پاکستان سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے سی ڈی اے کے ملازم اور بچوں کے باپ ندیم نے بتایاکہ دونوں بچے پیدائشی طورپر پلیٹ لیٹس فنکشنل ڈس آرڈکے مریض ہیں جس کی وجہ سے ان کے ناک ، منہ ، کان اور پاخانے میں خون آتاہے جس کو روکنے کے لیے خون کے سفید خلیے لگاتے ہیں اور کبھی کبھار بوقت ضرورت سرخ خون بھی لگانا پڑتاہے ، بیٹی کی عمرآٹھ سال جبکہ بیٹے کی سات سال ہے ، شروع میں خون عطیہ کرنیوالے افراد مل جاتے تھے لیکن ابھی کبھی کبھار وہ بھی خریدنا پڑجاتاہے.

ندیم کاکہناتھاکہ اسلام آباد کے پانچ ہسپتالوں سے خون لگواتے رہے ہیں ، گزشتہ سال نومبر میں بیٹی کی طبیعت زیادہ خراب ہوئی تو تمام ٹیسٹ کرائے گئے جس میں انکشاف ہواکہ وہ ایڈز کی مریضہ بن چکی ہے، ڈاکٹروں کی ہدایت پر تمام اہلخانہ نے ایڈز کے ٹیسٹ کرائے توبیٹے کے بھی ایچ آئی وی مثبت ہونے کی تصدیق ہوگئی اور اگر کوئی اس خاندان کی مدد کرناچاہیے تو فون نمبر 03126994487پر رابطہ کیا جاسکتاہے. ایک سوال کے جواب میں ندیم نے بتایاکہ ہسپتالوں نے انکوائریاں بھی کروائیں اور سارے ہی بری الزمہ ہوگئے ہیں ، کچھ لوگ مدد بھی کردیتے ہیں اور بوقت ضرورت گھر کی چیزیں بھی بیچی ہیں.ویڈیو دیکھئے

..


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top