موت کے سوداگر کھلے عام ملاوٹ شدہ اور زہر ملا دودھ بازار میں فروخت کر رہے ہیں

لاہور(قدرت روزنامہ12جنوری2017)موت کے سوداگر کھلے عام ملاوٹ شدہ اور زہر ملا دودھ بازار میں فروخت کر رہے ہیں .بازار سے لایا جانے والا دودھ آج کل بچوں بڑوں سب کے لیے مضر صحت بنتا جا رہا ہے ، فوڈ اتھارٹی کی ریسرچ کے مطابق دودھ میں پائے جانیوالے زہریلے اجزا کا اصل سبب جانوروں کو دیا جانیوالا چارہ، سائیلج ہے جو انسانی صحت کیلئے انتہائی مضر ہے.

تفصیلات کےمطابق دودھ میں ملاوٹ کا شور ہر جانب سننے میں آ رہا ہے فوڈ اتھارٹی اور محکمہ لائیوسٹاک کی جانب سے کارروائیاں بھی کی جارہی ہیں لیکن پنجاب ڈیری ڈویلپمنٹ کی سی ای او سائرہ افتخار نے نیا انکشاف کر دیا ہے. کہتی ہیں کہ جانوروں کی خوراک کے طور پر استعمال ہونے والے سائیلج کے باعث جانوروں کے دودھ میں فارمالین اور سوڈیم کلورائیڈ پایا گیا ہے جبکہ الفاٹاکسن کی مقدار ستر فیصد پائی گئی جو دودھ میں اعشاریہ سات فیصد سے زائد نہیں ہونی چاہیے الفاٹاکسن دودھ کو ابالنے سے بھی ختم نہیں ہوتا اور اس کے باعث متعدد بیماریاں بھی لاحق ہوتی ہیں. دودھ بنیادی ضرورت ہے لیکن اس کی تیاری میں استعمال ہونے والے زہریلے اجزاءکے انکشاف کے بعد سرکاری اداروں کی جانب سے اس کو روکنا ایک بڑا چیلنج بن گیا ہے.

..


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

تازہ ترین

Daily QUDRAT is an UrduLanguage Daily Newspaper. Daily QUDRAT is The Largest circulated Newspaper of Balochistan .

رابطے میں رہیں

Copyright © 2017 Daily Qudrat.

To Top