پاکستانی معیشت اس سے کہیں زیادہ ملکی خزانے کو واپس کریگی ملک کو نظر لگ گئی تھی پچھلی حکومتوں نے مسائل میں اضافہ کیا

22

ملک کو اندھیروں میں دھکیلنے والوں سے پوچھ گچھ ہونی چاہئے ، وزیر اعظم نواز شریف ا تقریب سے خطاب وزیر اعظم نوازشریف نے پشاور موٹر وے سے نیو ائیر پورٹ اسلام آباد تک میٹر ومنصوبے کی منظوری دیدی اسلام آباد (اے پی پی) وزیراعظم محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ توانائی کے بحران، امن و امان کے قیام اور معیشت کی بحالی جیسے بڑے مسائل پر قابو پا لیا گیا ہے، تعیر و ترقی کے منصوبوں سے بیروزگاری کا خاتمہ ہو گا اور ملک میں خوشحالی آئے گی، 180 ارب روپے کے پیکیج کے تحت اقدامات سے ملکی برآمدات میں کئی گنا اضافہ ہو گا، خواہش ہے کہ زراعت و صنعت کے شعبے تیزی سے آگے بڑھیں، پاکستان کی معاشی کارکردگی کا عالمی سطح پر اعتراف کیا جا رہا ہے. وہ منگل کو یہاں تجارت کے فروغ کیلئے اقدامات کی تقریب سے خطاب کر رہے تھے.

وفاقی وزیر خزانہ سینیٹر اسحاق ڈار، وفاقی وزیر تجارت خرم دستگیر، وفاق ایوانہائے صنعت و تجارت پاکستان (ایف پی سی سی آئی) کے صدر زبیر طفیل، آل پاکستان ٹیکسٹائل ملز ایسوسی ایشن کے چیئرمین عامر فیاض شیخ، وزراء، ارکان پارلیمنٹ اور معروف برآمد کنندگان اور کاروربای شخصیات بھی تقریب میں موجود تھیں. وزیراعظم نے کہا کہ 180 ارب روپے کے پیکیج سے کاروبار اور برآمدات میں کئی گنا اضافہ ہو گا، اس سے قبل کاشتکاروں کی ترقی کیلئے بھی پیکیج دیا گیا تھا، خواہش ہے کہ زراعت اور صنعت دونوں شعبے تیزی سے ترقی کریں جس سے بیروزگاری اور جہالت کا خاتمہ ہو گا اور ملک آگے بڑھے گا. انہوں نے کہا کہ اب حالات بہت بہتر ہیں، 2013ء سے قبل ملک کو بجلی کی لوڈ شیڈنگ، دہشت گردی سے امن و امان، بیروزگاری اور معاشی عدم استحکام جیسے بڑے مسائل کا سامنا تھا، ملک کے مستقبل کے بارے میں قیاس آرائیاں ہو رہی تھیں، یہ معمولی مسائل نہیں تھے، اس حوالہ سے پچھلی حکومتوں سے پوچھا جانا چاہئے کہ انہوں نے اس طرف توجہ کیوں نہیں دی. وزیراعظم نے کہا کہ اب توانائی کی قلت کے مسئلہ پر قابو پا لیا گیا ہے، ملکی معیشت مستحکم ہوئی ہے اور اقتصادی اشاریوں میں بہتری اور ترقی کا اعتراف عالمی ادارے کر رہے ہیں.انہوں نے بعض ٹی وی چینلز کی جانب سے بلاجواز تنقید کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ہم تعمیری تنقید کا خیرمقدم کرتے ہیں لیکن ایسا ماحول پیدا نہیں کیا جانا چاہئے جس سے ملک میں مایوسی پھیلے. حکومتی پالیسیوں پر تنقید اصلاح کے پہلو سے ہونی چاہئے. وزیراعظم نے کہا کہ بجلی کی لوڈ شیڈنگ آج بہت کم ہو چکی ہے جو 2018ء میں ختم ہو جائے گی، ہمارا مقصد صرف بجلی کی قلت کو ختم کرنا نہیں بلکہ اس کے نرخ بھی کم کرنا ہے، بجلی کی قیمت 4 سے 5 روپے فی یونٹ کم ہوئی ہے جس میں مزید کمی بھی ہو گی، اس سمت میں ہم آگے بڑھ رہے ہیں، بجلی کے کارخانے لگائے جا رہے ہیں. انہوں نے کہا کہ تربیلا اور منگلا سے بھی بڑے منصوبے بھاشا ڈیم کی تعمیر کا فیصلہ کیا ہے جس سے 4500 میگاواٹ بجلی حاصل ہو گی، منصوبہ کو ملکی وسائل سے پورا کیا جائے گا. وزیراعظم نے کہا کہ 2018ء میں 10 ہزار میگاواٹ بجلی سسٹم میں شامل ہو جائے گی جبکہ آئندہ چند سالوں میں 30 ہزار میگاواٹ بجلی سسٹم میں شامل ہو گی، یہ کوئی معمولی بات نہیں ہے. انہوں نے کہا کہ حکومت نے ریلوے کی اپ گریڈیشن کا کام بھی شروع کیا ہے جس سے ٹرینوں کی رفتار دگنی ہو جائے گی. اس موقع پر وزیراعظم نے ملک میں شاہراہوں کی تعمیر کے منصوبوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ان منصوبوں سے ملک کے تمام حصوں کو آپس میں منسلک کیا جا رہا ہے. اس کے علاوہ کھیت سے منڈی تک سڑکوں کی تعمیر کے منصوبے بھی انتہائی اہمیت کے حامل ہیں. انہوں نے کہا کہ بلوچستان مکمل طور پر بدل رہا ہے، پورے ملک میں تعمیر و ترقی کے منصوبوں پر کام کیا جا رہا ہے. انہوں نے کہا کہ ملکی معیشت بہتر ہوئی ہے، عالمی ادارے پاکستان کی معیشت کی بحالی اور ترقی کا اعتراف کر رہے ہیں. وزیراعظم نے کہا کہ زراعت کے بعد برآمدات کے شعبہ کیلئے دیئے گئے پیکیج کے تحت اقدامات سے کاروبار اور معیشت پر مثبت اثرات مرتب ہوں گے جس سے بیروزگاری جیسے مسائل کا خاتمہ ہو گا اور ملک ترقی کرے گا. قبل ازیں وزیر خزانہ محمد اسحاق ڈار نے اپنے خطاب میں کہا کہ اس اہم تقریب کے انعقاد کے پس پردہ بہت محنت کار فرما ہے. انہوں نے کہا کہ کاروباری برادری بالخصوص برآمد کنندگان سے تفصیلی گفت و شنید کی گئی، برآمد کنندگان سے مذاکرات کے بعد جامع پیکیج تشکیل دیا گیا ہے. انہوں نے کہا کہ حکومت نے گذشتہ دو سال کے دوران برآمدات کے فروغ کیلئے متعدد اہم اقدامات اٹھائے ہیں، بجٹ میں برآمدات کے پانچ اہم شعبہ جات کو زیرو ریٹ کیا گیا، ٹیکسٹائل کے شعبہ کو کئی مراعات دی گئیں. اس کے علاوہ زراعت کے شعبہ کی ترقی کیلئے تاریخی پیکیج دیا گیا، اس پیکیج کو ملک بھر میں بھرپور پذیرائی ملی. انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کی خواہش تھی کہ ملکی سٹاک مارکیٹ مضبوط ہو. انہوں نے کہا کہ سٹاک مارکیٹ میں غیر ملکی سرمایہ کار آ رہے ہیں. انہوں نے کہا کہ وزیراعظم محمد نواز شریف ملک کو خود مختار، پرامن اور خوشحال بنانے کے خواہاں ہیں. اس ضمن میں معیشت سمیت تمام شعبہ جات میں اہم اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں اور ان کا یہ خواب یقیناً شرمندۂ تعبیر ہو گا. وفاق ایوانہائے صنعت و تجارت کے صدر طفیل زبیر نے اپنے خطاب میں مطالبات من و عن تسلیم کرنے پر وزیراعظم کا شکریہ ادا کیا. انہوں نے کہا کہ گذشتہ تقریباً اڑھائی برسوں میں ہونے والی ترقی وزیراعظم کی قیادت کے باعث ممکن ہوئی ہے، زرمبادلہ کے ذخائر میں نمایاں اضافہ، سٹاک مارکیٹ میں تیزی، افراط زر کی شرح میں کمی سمیت اقتصادی اشاریے مثبت ہیں جو مضبوط معیشت کی عکاسی کرتے ہیں. انہوں نے کہا کہ کراچی امن اور روشنیوں کا شہر بن گیا ہے جس پر کراچی کے عوام وزیراعظم کے مشکور ہیں. آل پاکستان ٹیکسٹائل ملز ایسوسی ایشن کے چیئرمین عامر فیاض شیخ نے کہا کہ 2013ء کے وہ دن بھی ہمیں یاد ہیں جب ملکی خزانے خالی تھے، آج معشیت مستحکم اور توانائی کے بحران پر کافی حد تک قابو پا لیا گیا ہے. انہوں نے کہا کہ تمام ترقی یافتہ ملکوں نے برآمد ت میں ترقی کرکے ملک کو ترقی کی راہ پر گامزن کیا ہے. انہوں نے کہا کہ قومی سلامتی کیلئے مضبوط معیشت ناگزیر ہے. انہوں نے کہا کہ وسائل کی کمی کے باوجود برآمدات کے فروغ کیلئے پیکیج کے تحت سہولیات فراہم کرنے پر وزیراعظم کے شکر گزار ہیں. وزیراعظم نواز شریف نے پشاور موڑ سے نیو ائیرپورٹ اسلام آباد تک میٹرو منصوبے کی منظوری دیتے ہوئے چیئرمین این ایچ اے کو ہدایت کی ہے کہ ہنگامی بنیادوں پر میٹرو بس منصوبہ شروع کیا جائے اور چھ ماہ کی قلیل مدت میں منصوبہ کو مکمل کیا جائے. پشاور موڑ سے نیو ائیرپورٹ تک میٹرو ٹریک 25.6 کلومیٹر طویل ہوگا منصوبے پر اٹھارہارب روپے کی لاگت آئے گی اور 14 سے زائد بس سٹاپ بنائے جائیں گے. وزیراعظم نواز شریف نے آج چیئرمین این ایچ اے سے ملاقات کے دوران واضح کیا کہ نیو انٹرنیشنل ائیرپورٹ اسلام آباد اور مذکورہ میٹرو منصوبے کا افتتاح 14 اگست کو ہوگا. اس منصوبے سے جہاں نئے ائیرپورٹ کے مسافروں کوفائدہ ہوگا وہیں پر گرد نواح کی آبادیاں اس سے مستفید ہوں گی جس سے وقت کی بچت اور ٹریفک دباؤ میں کمی آئے گی. وزیراعظم نواز شریف کی منظوری اورہ دایت کے بعد چیئرمین این ایچ اے اشرف تارڑ ہنگامی طور پر لاہور روانہ ہوگئے جہاں وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کووہ میٹرو منصوبے کے حوالے سے بریف کریں گے...


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

Daily QUDRAT is an UrduLanguage Daily Newspaper. Daily QUDRAT is The Largest circulated Newspaper of Balochistan .

رابطے میں رہیں

Copyright © 2017 Daily Qudrat.

To Top