موبائل کمپنیوں کا ایڈوانس لون دیکر واپسی کے وقت اضافی رقم لینا یہ سود کے دائرے میں نہیں آتا

26

اسلام آباد (قدرت روزنامہ09جنوری2017)اکثر جب بات کرتے کرتے موبائل کا بیلنس ختم ہوجائے اور بات بھی بڑی ضروری ہو تو انتہائی پریشانی ہوتی ہے، موبائل کمپنیوں نے اس مسئلے کا حل یہ  نکالا ہے کہ وہ لگ بھگ دس روپے کا لون بیلنس کی شکل میں فراہم کر دیتی ہیں - جب بعد میں کارڈ لوڈ کروایا جاتا ہے تو یہ لون کچھ اضافی رقم کے ساتھ  منہا کرلیا جاتا ہے- اکثر لوگوں کو شبہ ہے کہ یہ لون اور اس پر کاٹی جانے والی رقم سود کے زمرے میں آتی ہے- اس بارے میں دارالعلوم دیوبند نے ایک فتوی جاری کیا ہے جس کے مطابق "موبائل کمپنیوں کا ایڈوانس لون دیکر واپسی کے وقت اضافی رقم لینا یہ سود کے دائرے میں نہیں آتا ،کیونکہ کمپنی کی طرف سے لون ملنے کی شکل یہ ہوتی ہے کہ اس کی طرف سے جو بیلنس موبائل میں ٹرانسفر کیا جاتا ہے وہ در حقیقت گفتگو کا حق دیا جاتا ہے وہ روپیہ کی شکل میں وصول نہیں کیا جاسکتا، پس جانبین سے اتحاد جنس نہیں پایا جاتا اس لیے اضافی رقم پر سود کا حکم نہیں."

.
.


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

Daily QUDRAT is an UrduLanguage Daily Newspaper. Daily QUDRAT is The Largest circulated Newspaper of Balochistan .

رابطے میں رہیں

Copyright © 2017 Daily Qudrat.

To Top