دھرنا منسوخ کیوں ہوا؟ اندر کی تہلکہ خیز کہانی منظر عام پر آگئی

imran_647_121115113056

اسلام آباد(قدرت روزنامہ02نومبر2016)تحریک انصاف کے چیرمین نے اعلان کیا تھا کہ مر جائیں گے لیکن دھرنا کر کے رہیں گے، پھر آخر ایسا کیا ہوا کہ انہیں دھرنا شروع ہونے سے پہلے ہی ختم کرنے کا اعلان کرنا پڑا- معتبر ذرائع کے مطابق عمران خان کو پارٹی کے سینئر لیڈروں سے شکوہ تھا کہ وہ ملک بھر سے لوگوں کو اکٹھا کرنے کا وعدہ پورا نہیں کرسکے- عمران خان اور سینئر پارٹی لیڈر تین دن تک بنی گالہ میں ہی عیش و آرام سے موجود رہے اس کی وجہ سے بھی کارکن بہت دلبرداشتہ ہوئے کیونکہ خان صاحب نے چار قدم سڑک پر آکر چلنے کی ہمت بھی نہیں کی، خان صاحب اگر سڑک پر نکل پڑتے اور پولیس انہیں روکتی تو یقینا" یہ لمحہ میڈیا پر دیکھ کر کارکنان پرجوش ہوجاتے -ذرائع کے مطابق خان صاحب کو یہ بھی شکوہ رہا کہ ان کے سینئر لیڈردھرنے کے لیے متوقع چندا اکھٹا کرنے میں بھی ناکام رہے ، جب نعیم بخاری نے پانچ لاکھ چندا دینے کا اعلان کیا تو خان صاحب نے باقی پارٹی لیڈران کی طرف دیکھا لیکن سب نے آئیں بائیں شائیں شروع کر دی اور بمشکل جیب ڈھیلی کرنے پر آمادہ ہوئے-دو تین دن تک جب کارکنوں کی مایوس کن تعداد نہ بڑھ سکی تو پارٹی لیڈران نے ہی یہ مشورہ دیا کہ دھرنے کی بجائے جلسہ کر لیا جائے کیونکہ دھرنے کے انتظامات مکمل نہیں-عمران خان نے اس بات پر پارٹی لیڈران سے سخت باز پرس بھی کی اور بالاخر فیصلہ کیا کہ دھرنے کو جلسے میں تبدیل کرلیا جائے-چیئرمین تحریک انصاف کو پتا تھا کہ دھرنا منسوخ کرنے کے اعلان کی صفائی کارکنوں کے سامنے پیش کرنا بڑا مشکل ہوگا لہذا انہوں نے طاہرالقادری والا انداز اپنایا اور دھرنے کی ناکامی کو بھی اپنی فتح قرار دے کر یوم تشکر منانے کا اعلان کر دیا- خان صاحب کے اس اعلان سے تحریک انصاف کے کارکن ششدر رہ گئے اور انہیں یقین ہی نہیں آیا کہ اتنے جوش و جذبات سے دھرنے کے اعلانات کرنے والے خان صاحب یوں اچانک یوٹرن لے سکتے ہیں-

..


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

Daily QUDRAT is an UrduLanguage Daily Newspaper. Daily QUDRAT is The Largest circulated Newspaper of Balochistan .

رابطے میں رہیں

Copyright © 2017 Daily Qudrat.

To Top