زیادہ چکنائی والی غذائیں دماغ کے حصے کو متاثر کرتی ہیں، تحقیق

اسلام آباد (قدرت روزنامہ21اپریل2017)واشنگٹن ڈی سی: اگر آپ اپنا وزن کم کرنا چاہتے ہیں تو مکھن اور تلی ہوئی چیزوں سے پرہیز کریں. یونیورسٹی آف نیپلس فیڈریکو دوم کی تحقیق کے مطابق وہ غذا جو سیچوریٹڈ فیٹ سے لبریز ہوتی ہے دماغ کے حصے جسے ہائیپوتھیلیمس کہا جاتا ہے (جو بھوک کو قابو میں رکھتا ہے)،کو متاثر کرتی ہےاور آپ جب کچھ کھاتے ہیں تو خود پر قابو رکھنا مشکل ہوجاتا ہے.

آسان الفاظ میں لوگوں کو اِس چیز پر قابو رکھنا مشکل ہوجاتا ہے کہ وہ کتنا کھاگئے ہیں ، کب رکنا ہے اور کس قسم کی غذا کھانی ہے. علامات موٹاپے میں دکھتے ہیں. چوہوں پر کی جانےوالی تحقیق میں پتا چلا کہ سیچوریٹڈ فیٹ سے لبریز غذائیں کسی بھی شخص کے ادراکی فنکشن کو کم کر دیتے ہیں جس سے ان کو کھانے کی عادت کو قابو کرنے میں مشکل پیش آتی ہے. محققین نے بتایا کہ میٹابولزم پر زیادہ چکنائی والی غذاؤں کے اثرات پر بہت تحقیق ہوئی ہے لیکن اس کے دماغ پر اثرات کے بارے میں کم معلومات ہیں. زیادہ چکنائی والی غذائیں مختلف شکلوں میں لی جاسکتی ہیں،چکنائی کی مختلف اقسام ہیں.سیچوریٹڈ فیٹ جو مکھن یا تلی ہوئی چیزوں میں ہوتا ہے اور ان سیچوریٹڈ فیٹ مچھلی میں اور زیتون کے تیل جیسی غذاؤں میں موجود ہوتا ہے. مچھلی کے تیل کاا ستعمال واضح فرق رکھتا ہے. تحقیق کے مطابق دماغ معمول کے مطابق رہتا ہے اور زیادہ کے بجائے ضروت کے وقت کھانے پر منظم رہتا ہے...


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top