انسانی جلد پر رونگٹےکیوں نمودار ہوتے ہیں؟

اسلام آباد (قدرت روزنامہ20اپریل2017)اکثر ٹھنڈے پانی سے نہانے کے بعد ہوا دار کمرے میں داخل ہوتے ہی تو جھرجھری سے محسوس ہوتی ہے اور اس کے سبب جلد پر رونگٹے نمودار ہونے لگتے ہیں. لیکن جیسے ہی آپ کا جسم اپنے نارمل درجہ حرارت پر آتا ہے تو یہ رونگٹے بھی غائب ہوجاتے ہیں.

آخر اس کے پیچھے کیا وجہ ہے؟ اکثر پرانی باتوں کو یاد کرنے کے باعث بھی یہ کیفیت ہو جاتی ہے .داراصل ان رونگٹوں کے نمودار ہونے کے پیچھے کوئی خاص وجہ نہیں ہوتی ، یہ تبدیلی آپ کسی بھی وقت محسوس کر سکتے ہیں. ماہرین نفسیات کے مطابق رونگٹے نمودار ہونے کے اصل وجہ جذبات اور احساسات ہیں. یہ انسانوں کی طرح جانوروں کی جلد پر بھی نمودار ہوتے ہیں. جب جانوروں کے جلد کے بال جھڑتے ہیں تب ان کی جلد پر رونگٹے آتے ہیں. جانوروں کی جلد پر موجود بالوں کی گہری تہہ کے باعث ان کی جلد پر انسانوں کی بانسبت کم نمودار ہوتے ہیں ، کیونکہ انسانوں کی جلد پر بالوں کی تہہ کم ہوتی ہے اس لئے ان کی جلد پر رونگٹے نمودار ہوتے ہیں. جانوروں کی بانسبت انسانوں کو زیادہ رونگٹے محسوس ہوتے ہیں اس کی وجہ یہ ہے کہ جانوروں کی جلد پر بالوں کی گہری تہہ ہوتی ہے جبکہ انسانوں کی جلد پر بالوں کی تہہ زیادہ موٹی نہیں ہوتی. یہ تمام صورتحال میں انسانی جسم میں اسٹرس ہارمون ریلیز ہونے کے باعث ہوتی ہے. جس کو ایڈرلین کا نام دیا گیا ہے.ایڈرلین جوکہ انسانوں کی گردوں کے اوپر دو چھوٹے بین کی طرح گلینڈز کی صورت میں تیار ہوتے ہیں.ان گلینڈز کی وجہ سے انسانی جلد پر رونگٹے نمودار ہوتے ہیں. جانوروں میں یہ ہارمونز تب ریلیز ہوتے ہیں جب جانور کسی ذہنی دباؤ کا شکار ہوتے ہیں یا جب جانور آپس میں لڑائی کرنے والے ہوتے ہیں. انسانوں میں ایڈرلین ریلیز ٹھنڈ لگنے کی یا پھر خوف محسوس ہونے کی صورت میں ریلیز ہوتے ہیں. اس کے علاوہ ذہنی دباؤ، خوشی اور غصے کی حالت میں بھی یہ ہارمونز ریلیز ہوتے ہیں. ہاتھوں میں پسینہ آنا، ہاتھوں کا کانپنا، بلڈ پریشر کا بڑھنا، دل کی دھڑکن کا تیز ہونااور بن روئے آنسوؤں کا آنا بھی ایڈرلین ہارمونز کے ریلیزہونے کے سبب ہوتا ہے...


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top