فیس بک کی جانب سے بھیجے جانے والے میسجز کو بغور پڑھیں کیونکہ۔۔۔

لندن(قدرت روزنامہ17مارچ2017)یوں تو ہر قسم کی تحریر کو توجہ سے پڑھنا چاہیے لیکن سوشل میڈیا میسجز کو بے دھیانی سے پڑھ کر جواب دے ڈالنا بہت مہنگا پڑسکتا ہے. اس عدم توجہی کا نتیجہ کیا نکل سکتا ہے، فیس بک کے ایک میسج کا بغیر سوچے سمجھے جواب دینے والے نوجوان کے ساتھ پیش آنے والے واقعے سے اس کا اندازہ بخوبی کیا جاسکتا ہے.

دی میٹرو کی رپورٹ کے مطابق جان برلی نامی نوجوان کو فیس بک کی جانب سے میسج موصول ہوا ”آج اپریل آرکٹ کی سالگرہ ہے، ان کی ٹائم لائن پر اپنی نیک تمنائیں پوسٹ کرنے کے لئے جواب دیںیا ’ہیپی برتھ ڈے‘کہنے کے لئے 1 کے ساتھ جواب دیں.“ یقینا آپ بھی اتفاق کریں گے کہ فیس بک کی جانب سے ہر کسی کی سالگرہ یاد دلوانے کی عادت ہر کسی کو پسند نہیں ہے. اکثر لوگوں سے ہمارا رسمی تعلق ہوتا ہے اور بہت سوں کو ہم ’ہیپی برتھ ڈے‘ کہنے کے موڈ میں نہیں ہوتے. جان برلی کا موڈ بھی کچھ ایسا ہی ہو رہا تھا، لیکن اس کی بدقسمتی تھی کہ اس نے میسج میں لکھے نام کو دھیان سے نہیں پڑھا اور غصے میں جوابی میسج لکھا ”مجھے میسج بھیجنا بند کریں، میں لعنت بھیجتا ہوں.“ فیس بک نے جان برلی کا یہ جواب اپریل آرکٹ کی ٹائم لائن پر پہنچادیا. ادھر بیچاری اپریل ہرگز توقع نہیں کررہی تھیں کہ ان کی سالگرہ کے پیغام کا کوئی اس طرح جواب دے گا. انہوں نے فوری طور پر جوابی پیغام میں لکھا ”معاف کیجئے گا، کیا مطلب ہے آپ کا؟“ اس کے بعد جان برلی کا کیا حال ہوا ہوگا، یہ تصور کرنا کچھ زیادہ مشکل نہیں. اس نے اپنے ساتھ پیش آنے والے اس افسوسناک واقعے کا ماجرا خود ہی سوشل میڈیا پر بیان کیا ہے اور سب کو تاکید کی ہے کہ فیس بک کی جانب سے موصول ہونے والے کسی بھی میسج کو سرسری طور پر پڑھ کر جواب دینے سے پرہیز کریں ورنہ بہت پچھتانا پڑے گا...


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top