سپریم کورٹ نے تاریخی فیصلہ دے کر ملک میں جمہوری نظام کو مزید مضبوط بنایا‘سینیٹر سردار یعقوب خان ناصر

کوئٹہ (آن لائن)بلوچستان کی سیاسی جماعتوں نے پاناما کیس سے متعلق ملے جلے رد عمل کا اظہار کر تے ہوئے کہا کہ سپریم کورٹ نے تاریخی فیصلہ دے کر ملک میں جمہوری نظام کو مزید مضبوط بنایا اور جو لوگ ملک میں انار کی پیدا کر نا چا ہتے تھے وہ اب اس فیصلے کے بعد اپنے گھروں میں جا کر بیٹھیں اور سیاست ان کا کام نہیں ہے بلکہ کسی اور ملک میں کسی بھی کرکٹ ٹیم کے لئے کوچنگ کا آغاز کریں سپریم کورٹ کا فیصلہ عوام کے امنگوں کے مطابق نہیں تھا ماضی میں جو عدالتوں کے ذریعے جو فیصلے کئے گئے وہ فیصلے آج بھی ہوئے بد قسمتی سے ملک میں جو بھی جماعت بر سر اقتدار ہو گی اس کے خلاف کوئی بھی فیصلہ نہیں آئے گامسلم لیگ(ن) کے مرکزی سینئر نائب صدر اور سینیٹر سردار یعقوب خان ناصر نے کہا کہ وزیراعظم نے پاناما کیس سے متعلق پہلے ہی کمیشن بنا نے کے لئے سپریم کورٹ کو خط لکھا تھا مگر سیاسی جماعتوں نے کمیشن بنانے سے انکار کیا تھا سپریم کورٹ کے فیصلے سے ملک میں جمہوری نظام مضبوط ہو گیا اور جو لوگ دھرنوں کے سیاست کے ذریعے اپنی ساکھ کو بچانے کی کوشش کر رہے تھے وہ مکمل طور پر ناکام ہو چکے ہیں اورسپریم کورٹ نے جے آئی ٹی کے ذریعے مزید کیس کی تحقیقات کرینگے اور جے آئی ٹی میں وزیراعظم اور ان کے بیٹے پیش ہونگے اور اللہ تعالیٰ کا شکار ادا کر تے ہیں کہ اب ملک ترقی کرے گا اور ہمیں پہلے ہی امید تھی کہ سپریم کورٹ کے ججز عوام کے حق میں بہتر فیصلے کرینگے کمیشن کے ساتھ بھی حکومت اور وزیراعظم مکمل تعاون کرینگے انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی سیاست ختم ہو چکی ہے اب ان کے چیئرمین کو چاہئے کہ وہ کسی اور ملک میں کسی ٹیم کی کوچنگ کے لئے وقت دیں سیاست ان کا کام نہیں ہے عوام ان کی یوٹرن لینے سے بیزار آچکے ہیں ضمنی انتخابات میں بھی مسلم لیگ(ن) نے ہر جگہ پر تحریک انصاف کو شکست سے دوچار کی ہے جھوٹے الزامات لگانے والوں کی سیاست کا باب ہمیشہ ہمیشہ کیلئے دفن ہو گیا بلوچستان نیشنل پارٹی کے مرکزی رہنماء ملک عبدالولی کاکڑ نے کہا کہ ماضی میں اس طرح فیصلوں کی وجہ سے ملک انارکی کی طرف گیا اور اب مزید انار کی پیدا ہو گی عدالتوں سے یہ امید تھی کہ جو جماعت اقتدار میں ہو گی ان کی مرضی کے مطابق عدالتیں فیصلے کر تے ہیں عوام کے امنگوں کے مطابق فیصلہ نہیں کیا جس کی وجہ سے آج ملک کے16 کروڑ عوام پاناما کیس سے متعلق فیصلہ پر مایوس ہو چکے ہیں جو لوگ آج مٹھائیاں تقسیم کر رہے تھے ان کو مزید کرپشن کا موقع مل گیا جماعت اسلامی کے صوبائی امیر عبدالمتین اخونزادہ نے کہا کہ سپریم کورٹ نے جو فیصلہ دیا وہ ٹھیک ہے لیکن جو امید تھی فیصلے سے متعلق اس طرح فیصلہ نہیں ہوا سوچے سمجھے منصوبے کے تحت یہ فیصلہ دیا گیا وزیراعظم کی نا اہلی کا فیصلہ نہ آنا افسوسناک ہے فیصلے نے دونوں فریقین کو خوش کیا جے آئی ٹی کے رپورٹ آنے تک صبر کرینگے اخلاقی طور پر نوازشریف کو تحقیقات ہونے تک استعفیٰ دینا چا ہئے تھا مگر افسوس کہ وہ ایسا نہ کر سکے جماعت اسلامی ماضی کی طرح اب بھی کرپشن کے خلاف احتجاج کرینگے ..

.


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top