فروری کو لاہور میں چئیرنگ کراس مال روڈ پر ہونے والے دھماکے کے بعد اسی رات کوئٹہ میں بھی بارودی مواد کو ناکارہ بنایا گیا

کوئٹہ(قدرت روزنامہ16-فروری-2017) 13 فروری کو لاہور میں چئیرنگ کراس مال روڈ پر ہونے والے دھماکے کے بعد اسی رات کوئٹہ میں بھی بارودی مواد کو ناکارہ بنایا گیا . بی ڈی ایس میں شامل کمانڈر عبد الرزاق ، جنہوں نے اپنی 23 سالہ سروس میں 500 سے زائد بارودی مواد کو ناکارہ بنایا ، بم ڈفیوز کرتے ہوئے جان کی بازی ہار گیا.

رزاق یوں تو ایک کماندر تھا لیکن اس کے جونئیر اسے اُستاد کہہ کر بلاتے تھے.کوئٹہ کے علاقہ سبزل روڈ پر ایڈووکیٹ امیر حمزہ کے گھر کے قریب بم کو ناکارہ بناتے ہوئے عبد الرزاق ایک پولیس اہلکار کے ہمراہ جان کی بازی ہار گیا. عبد الرزاق اپنے 7 بہن بھائیوں میں تیسرے نمبر پر تھا. عبد الرزاق کو اپنے بھانجے اور بھانجیوں سے سخت لگاؤ تھا.  عبد الرزاق کی والدہ کا کہنا ہے کہ عبد الرزاق ایک نہایت فرمانبردار بیٹا تھا .اس نے شادی کرنے سے بھی انکار کررکھا تھا عبدالرزاق کا کہنا تھا کہ اگر بم ڈفیوزل کے دوران کسی دن میں شہید ہوگیا تو میرے بعد میرے خاندان کا کیا ہوگا عبدالرزاق کے ساتھ کام کرنے والے لوگوں اور افسران کا کہنا ہے کہ عبدالرزاق صوبائی حکومتوں اور انتظامیہ کے قوانین کے خلاف بولتا تھا ...


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top