گوادرپاکستان کے روشن مستقبل کا ایک سنہرادورہوگا ملازمتوں کے حوالے سے بلوچستان کو اہمیت دی جائے، جماعت اسلامی کوئٹہ

کوئٹہ(آن لائن) جماعت اسلامی کے صوبائی امیر مولانا عبدالحق ہاشمی کی زیر صدارت صوبائی مجلس شوریٰ اجلاس میں سی پیک منصوبے کے حوالے سے قرارداد متفقہ طور پر منظور کی گئی جس میں بتایا گیا کہ جماعت اسلامی کی صوبائی مجلس شوریٰ اجلاس سی پیک منصوبے کی مکمل طور پر حمایت کرتی ہے اس کی تکمیل سے بلوچستان معاشی استحکام کے ایک نئے شانداردور میں داخل ہوجائیگا گوادرپاکستان کے روشن مستقبل کا ایک سنہرادورہوگا اس منصوبہ میں ملازمتوں کے حوالے سے بلوچستان کو اہمیت دی جائے اور اس کا اہتما م ومنصوبہ بندی ضروری ہے کہ بلوچستان کے عوام کی آبادی اپنی اصلی عددی قوت سے محروم نہ ہوجائے اجلاس وفاقی حکومت سے مطالبہ کرتی ہے کہ مغربی روٹ میں عام روٹ کے بجائے موٹرتعمیر کیا جائے کوئٹہ ژوب ٹرین کو اس منصوبہ کا حصہ بنایا جائے بوستان کے علاوہ کوئٹہ چمن کو بھی معاشی زون بنایا جائے صوبائی شوریٰ سی پیک منصوبے کو ناکام ومتنازعہ بنانے کی بھی مذمت کرتے ہوئے پاک چین راہداری منصوبے کا خیر مقدم کرتی ہے .سی پیک منصوبے سے بلوچستان کو ہر حوالے سے اہمیت دیکر ترقی دی جائیں معاشی ترقی دیکر بلوچستان کو بھی دیگر صوبوں کے برابرلایا جائے .

جماعت اسلامی بلوچستان کے صوبائی مجلس شوریٰ اجلاس کے ایک اورپاس کردہ قراردادجس میں گوادرمیں پینے کے پانی کی قلت وبحران پر دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے گوادرمیں حالیہ پانی بحران پر تشویش کا اظہار کیاقراردادمیں کہاگیا ہے کہ گوادرمیں گزشتہ پندرہ سالوں سے پینے کے پانی کا بحران ہے لیکن حکومتی اور بیوروکریسی کے صفوں میں کوئی سنجیدگی نظرنہیں آتی گوادرکے اردگردرہنے والوں کا انحصارگوادرکے قریب �آنکاڑہ ڈیم پرہیں جو کہ کئی سالوں سے سے مٹی تلے دب چکی ہے لیکن دوسری طرف آنکاڑہ ڈیم کے متبادل دونئے ڈیم شادیکورڈیم اورسوؤرڈیم کی تعمیرات گزشتہ کئی سالوں سے جاری ہیں حکومتی عہدیداروں اور بیوروکریسی میں کمیشن کے جھگڑوں کی وجہ سے اب تک یہ ڈیمزتعمیر کی تکمیل تک نہ پہنچ سکے اور اس کے ساتھ سمندر کے پانی کو میٹھا کرنے کیلئے پلانٹ اربوں روپوں سے بنادیے لیکن یہ پلانٹ بھی کرپشن کی نظرہوگیے آج پانی کے بحران میں یہ پلانٹس پانی فراہم کرنے سے قاصر ہیں جماعت اسلامی بلوچستان کی مجلس شوریٰ وفاقی اور صوبائی حکومت سے مطالبہ کرتی ہیں کہ گوادر پورٹ کی وجہ سے پورے ملک کی ترقی دینے کے دعوے کے بجائے گوادر کے رہنے والوں کو پینے کاصاف پانی اور عزت سے رہنے کیلئے سہولیات فراہم کی جائیں اگر ترقی کے ثمرات سے مقامی لوگ محروم رہیں گے تو احساس محرومی جنم لیتا ہے اوراحساس محرومی سے نفرت بڑھے گی اور شدت پسندوں کو موقع فراہم ہوگاقراردادمیں مطالبہ کیاگیا ہے کہ گوادرمیں پانی کے اسکیموں میں ہونے والی کرپشن کا نوٹس لیاجائے سمندر کے پانی کو میٹھا کرنے والے پلانٹس کو بحال کیا جائے گوادر کے عوام کو میرانی ڈیم سے پانی فراہم کیا جائے آنکارہ ڈیم اورشا دیکورڈیم کے کام کو جلد ازجلد مکمل کیا جائے...


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top