کردار سے خائف بعض سیاسی پارٹیاں بہتان تراشی ، میڈیا کے ذریعے ناکام مہم میں مصروف عناصر کو مایوسی اور ناکامی کا سامنا کرنا پڑیگا‘پشتونخوامیپ

57

چمن /کوئٹہ ( پ ر) صوبے کی مخلوط صوبائی حکومت اور پشتونخوامیپ کے سیاسی کردار سے خائف بعض سیاسی پارٹیاں بہتان تراشی ، میڈیا کے ذریعے ناکام مہم میں مصروف عناصر کو مایوسی اور ناکامی کا سامنا کرنا پڑیگا. پشتون قوم کے شناختی کارڈ کیلئے تمام ملک کے قوانین اور رولز سے ماورا برتاؤ اور سلوک ناقابل قبول ہے.

افغان مہاجرین کا بہانا بنا کر مردم شماری سے فرار ہونا دراصل ماضی کے بوگس مردم شماری کو تحفظ دینا ہے . سی پیک اور خصوصاانڈسٹریل اور اکنامک زونز کی کامیابی کیلئے انرجی کے منصوبوں کو اولیت دینا ہوگی. افغانستان کے امن سے خطے کی امن وخوشحالی وابستہ ہے ، ملک میں قوموں کی برابری جمہوریت ، حقیقی پارلیمانی نظام ، پارلیمنٹ کی بالادستی عوام کی حق حکمرانی کو مستحکم کرنے کیلئے تمام سیاسی پارٹیوں ، جمہوری قوتوں نے کردار ادا کرنا ہوگا . ان خیالات کا اظہار پارٹی کے صوبائی سیکرٹری صوبائی اسمبلی میں پارٹی کے پارلیمانی لیڈر صوبائی وزیر تعلیم عبدالرحیم زیارتوال ، پارٹی کے صوبائی ڈپٹی سیکرٹریز صوبائی وزیر منصوبہ بندی وترقیاتی ڈاکٹر حامدخان اچکزئی، علاؤالدین خان کولکوال ، ملک محمد عیسیٰ خان ، چےئرمین صلاح الدین اچکزئی، حاجی کلاں خان پہلوان ، حاجی شکور ، حاجی منان ، حاجی فدا محمد ، شیر علی اور دیگر نے کلی شالون میرالزئی ، شمولیت کرنیوالوں سے خطاب کرتے ہوئے کہی. شمولیت کے پروگرام کی صدارت صوبائی وزیر ڈاکٹر حامد خان اچکزئی نے کی. اس موقع پر جمعیت علمائے اسلام ودیگرسیاسی پارٹیوں سے 95کارکنوں نے مستعفی ہوکر پشتونخوامیپ میں شمولیت کا اعلان کیا . مقررین نے کہا کہ خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 2013کے الیکشن کے بعد پارٹی نے جو کامیابی حاصل کی اس کے نتیجے میں صوبے میں مخلوط صوبائی حکومت قائم ہوئی صوبائی حکومت نے روز اول سے صوبے کے عوام کیلئے ترقیاتی منصوبوں کی پلاننگ کرتے ہوئے پورے صوبے میں تمام محکموں کے ذریعے ترقیاتی کاموں کی منصوبہ بندی کی . اب ساڑھے تین سال کے بعد صوبے کی مخلوط صوبائی حکومت کی کارکردگی اور منصوبہ بندی کے نتائج عوام پر عیاں ہونا شروع ہوگئے ہیں ساڑھے تین سال میں تمام صوبے میں جو ترقیاتی کام ہوئے وہ گزشتہ چالیس سالوں میں دیکھنے کو نہیں ملی بعض سیاسی پارٹیاں جو سن 70سے اقتدار کا حصہ رہی اور انہوں نے عوام کیلئے نہ کوئی ترقیاتی کام کیا اور نہ ہی موجودہ حکومت کی کارکردگی دکھا سکے . اب اپنی ماضی کی ناکامیوں غفلت کوتاہیوں کا سد باب عوام کے سامنے غلط بیانی ، بہتان تراشی کی صورت میں چھپانے کی ناکام کوششوں میں مصروف ہے . ہمارے عوام کا حافظہ کمزور نہیں اور نہ ہی وہ اتنے ناسمجھ ہے کہ وہ مایوس اور ناکام سیاسی عناصر کے اخباری بیانات سے دھوکہ کھا جائینگے . صوبے کی نادرا صوبے کے پشتون علاقوں کیلئے تمام ملک کے قوانین ، رولزاور ضابطوں کے برخلاف پشتونوں سے کمپیوٹرائز شناختی کارڈ کیلئے ناجائز شرائط قابل قبول نہیں. مرکزی حکومت کو صوبے کے پشتون بیلٹ میں شناختی کارڈ جیسے اہم دستاویز میں پورے ملک صوبوں سے ماورا شرائط کا نوٹس ضروری اور لازمی ہے اور پشتونوں کو شناختی کارڈ سے محروم کرنے کی ہر سازش کا مقابلہ کیا جائیگا . انہوں نے کہا کہ 1998کی مردم شماری میں تمام افغان مہاجرین موجود تھے لیکن ان کی موجودگی پر واویلا نہیں کیا گیا اب کی مردم شماری پر واویلا دراصل آج کی کمپیوٹرائز دور میں ماضی کی بوگس مردم شماریوں کا خاتمہ ہونا لازمی فطرتی امر ہے . ہم پارٹی کی حیثیت سے کسی بھی غیر ملکی کے اندراج کے مخالف ہے . صوبائی حکومت سی پیک پر صوبے کیلئے بہترین منصوبہ بندی اور وزیر اعلیٰ کا چائنا کے دورے کے موقع پر صوبے کیلئے 12بڑے منصوبوں ، مغربی کوریڈور ، ریلوے ، اکنامک زونز اور بجلی کے منصوبے ترجیحی بنیادوں پر پائپ لائن میں ہیں. اور صوبائی حکومت ترجیحی بنیادوں پر بجلی کی ضروریات پوری کرنے کیلئے منصوبہ بندی کررہی ہے . انہوں نے کہا کہ افغانستان کی امن سے اس خطے کی امن وخوشحالی وابستہ ہے خطے کے تمام ممالک اور خصوصا اقوام متحدہ کی ذمہ داری ہے کہ وہ مداخلت کاروں کو روکیں اور افغانستان کو امن کا گہوارا بنانے میں اپنا اہم اور مثبت کردار ادا کرے. انہوں نے کہا کہ ملک میں جمہوریت ، قوموں کی برابری ، حقیقی وفاقی پارلیمانی جمہوری نظام پارلیمنٹ کی بالادستی اور جمہور کی حق حکمرانی کو مستحکم کرنے کیلئے ملک کی تمام سیاسی ، جمہوری پارٹیوں اور قوتوں نے کردار ادا کرناہوگا. انہوں نے کہا کہ روز اول سے خان شہید اور ان کے رفقاء کار نے ملک کو متفقہ آئین دینے ، ملک کو حقیقی وفاقی پارلیمانی جموریہ بنانے ، ون مین ون ووٹ کی بنیاد پر جمہور کی حکمرانی قائم کرنے ، قوموں کو برابری دینے اور ان کے مادری زبانوں اور قومی وسائل پر ان کے اختیارات کیلئے جدوجہد کیں. ون یونٹ 1956کا آئین ، 1958کی مارشل لاء ، 1962کا آمرانہ آئین ، 1969کی مارشل لاء اور 1970کے الیکشن کے نتائج سے انکار نے ملک کو دولخت کیا . اور اس کے بعد 1978اور 1999کے ضیاء اور مشرف مارشل لاؤں پر سپریم کورٹ نے اپنے فیصلے میں ملک کے اندر ماضی کے ان تمام اقدامات پر اپنا فیصلہ صادر کرتے ہوئے اس کیخلاف جدوجہد کرنیوالوں کو صحیح ملک دوست اور جمہوریت پسند قرار دیکر ان تمام اقدامات کرنے اور اس کی حمایت کرنیوالوں کیخلاف اپنا فیصلہ صادر کردیا ہے .سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد اب وطن دوست ، جمہوری رہبری پر الزامات بعض لوگوں اور قوتوں کی ناکامی پسپاہی کا منہ بولتا ثبوت ہے .انہوں نے کہا کہ 1978کے بعد افغانستان میں جو کشت وخون جاری ہوا اور جو لوگ افغانستان کے کشت خون کی پشت پناہی کررہے تھے ان کے فتویٰ بازی کا کردار آج ہم سب کے سامنے ہیں اور ہمارے عوام ان کرداروں کو سمجھ چکے ہیں اور جوق در جوق پارٹی میں شمولیت اختیار کررہے ہیں. مقررین نے آخر میں شمولیت کرنیوالوں کو مبارکباد دی . پشتونخواملی عوامی پارٹی کے صوبائی ڈپٹی سیکرٹری سٹینڈنگ کمیٹی برائے زراعت وخوراک کے چےئرمین رکن صوبائی اسمبلی نصراللہ خان زیرے نے شیخان علاقائی یونٹ کے زیر اہتمام اتحاد کالونی غازی فتح خان ابتدائی یونٹ میں تاج محمد خان بڑیچ، دین محمد بڑیچ، ولی محمد بڑیچ کی سربراہی میں50سیاسی کارکنوں سماجی وعوامی شخصیات کی پشتونخوامیپ میں شمولیت کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پشتونخوامیپ کی درست قومی سیاست تمام قومی بین الاقوامی سیاسی صورتحال پر صحیح موقف اپنانے اور پارٹی کی گزشتہ ساڑھے تین سال کی حکومتی کارکردگی ، عوامی فلاح وبہبودکے منصوبوں کی تکمیل اور عوام کے سرومال کے تحفظ کی بہتر اقدامات کے بدولت عوام کے مختلف طبقے جوق در جوق پارٹی میں شمولیت کا اعلان کررہے ہیں جوکہ ایک خوش آئند عمل ہے اور پارٹی اپنے عوام کی امنگوں کی تکمیل کیلئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریگی. عوامی اجتماع سے علاقائی سیکرٹری نظام عسکر ، تاج محمد خان بڑیچ اور یونٹ سیکرٹری محمد عثمان بڑیچ نے خطاب کیا . اس سے قبل پارٹی رہنماؤں کا علاقے میں پہنچے پر استقبال کیا گیا اور پارٹی کے رہنماؤں کے اعزاز میں عصرانہ دیا گیا . مقررین نے نئے شامل ہونیوالوں کو زبردست خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ آپ لوگوں کے درست فیصلے کے بدولت پشتون قومی تحریک کو مزید تقویت ملے گی اورپارٹی کو امید ہے کہ پشتونخوامیپ کے پلیٹ فارم سے اپنے قومی اہداف کے حصول کیلئے آپ اپنی تمام تر صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کرینگے . مقررین نے کہا کہ خا ن شہید عبدالصمد خان اچکزئی کے جمہوری ترقی پسند اور روشن فکر نظریات وافکار اور ان کی قومی وطبقاتی جدوجہد پشتون قومی تحریک اور محکوم اقوام وعوام کی قومی وجمہوری تحریکوں کیلئے مشعل راہ ہے جس پر کاربند ہوکر سیاسی جدوجہد کے ذریعے استعماری بالادستی ،نابرابری ،استحصال اور ظلم وجبر سے نجات حاصل کرکے قومی برابری ،جمہوریت ،سماجی انصاف اور امن وترقی کے قیام کی جدوجہد کو کامیابی سے ہمکنار کیا جاسکتا ہے خان شہید کی نظریات وافکار کو مشعل راہ بناکر ہی پشتونخوامیپ نے اہم جمہوری سیاسی پارٹی کا مقام حاصل کیا ہے. انہوں نے کہا کہ گزشتہ ساڑھے تین سالہ دور حکومت میں بہت سارے عوامی فلاح وبہبود کے اقدامات ومنصوبوں پر کام جاری ہے تعلیم ، صحت ، پینے کے صاف پانی اور دیگر ترقیاتی کاموں پر توجہ دی جارہی ہے اور ان فلاح وبہبود کے منصوبوں سے خائف ہوکر مخالفین اوچھے ہتھکنڈوں پر اتر آئے ہیں مگر ہمارے عوام سابقہ حکومت کے سیاہ کارناموں کو ہرگز نہیں بھول سکتے جب عوامی خزانے کے کروڑوں اربوں روپے کرپش ولوٹ مار کے شکار ہورہے تھے عوامی پیسوں پر اپنے بینک بیلنس اور جائیدادوں میں اضافہ کیا گیا جبکہ عوام کیلئے کچھ بھی نہیں کیا گیا . اسی طرح امن وامان کی صورتحال ماضی میں جس نہج تک پہنچ چکی تھی وہ ناقابل بیان ہے . تمام اہم بین الصوبائی شاہراہیں مکمل طور پر ڈاکوؤں ، اغواء برائے تاوان کے مسلح گروپوں کے رحم وکرم پر تھے جبکہ آج حد درجہ عوام اپنے آپ کو محفوظ تصور کررہے ہیں. انہوں نے کہا کہ حلقہ پی بی 5اور بالخصوص اتحاد کالونی اور گردنواح میں گزشتہ ساڑھے تین سال میں کروڑوں روپے کے ترقیاتی منصوبے پائے تکمیل تک پہنچ چکے ہیں آبنوشی ، سکولوں میں اضافی کمرے ، نئے بیسک ہیلتھ یونٹ کا قیام ، سڑکوں نالیوں کی تعمیر کی گئی ہے اور آج ہمارے منصوبے خود ہماری کارکردگی بیان کررہی ہے ...


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

Daily QUDRAT is an UrduLanguage Daily Newspaper. Daily QUDRAT is The Largest circulated Newspaper of Balochistan .

رابطے میں رہیں

Copyright © 2017 Daily Qudrat.

To Top