پہلے ہی دو بیویاں رکھنے والا ایک ادھیڑ عمر سعودی شخص جعلسازی کا سہارا لے کر ایک غیر ملکی خاتون کو اپنی تیسری بیوی بنانے کی کوشش میں سرعام رسوا ہوگیا

ریاض (قدرت روزنامہ17فروری2017)پہلے ہی دو بیویاں رکھنے والا ایک ادھیڑ عمر سعودی شخص جعلسازی کا سہارا لے کر ایک غیر ملکی خاتون کو اپنی تیسری بیوی بنانے کی کوشش میں سرعام رسوا ہوگیا ہے. سعودی گزٹ کی رپورٹ کے مطابق اس شخص نے غیر ملکی خاتون سے شادی کا جواز پیدا کرنے کیلئے اپنی پہلی اہلیہ کی شدید بیماری کا جعلی سرٹیفکیٹ بنوایا تھا.

وزارت انصاف کے ذرائع نے بتایا کہ اس شخص کی پہلی دونوں بیویاں عرب ہیں اور اس نے ایک غیر ملکی خاتون کو اپنی تیسری بیوی بنانے کیلئے درخواست دے رکھی تھی. اس نے ایک ایجنٹ کی خدمات بھی حاصل کررکھی تھیں، اور اسی ایجنٹ اسے مشورہ دیا کہ کام جلد کروانے کے لئے ضروری ہوگا کہ وہ اپنی پہلی اہلیہ کو قریب المرگ ثابت کر دے.
 ایجنٹ کے مشورے پر اس شخص نے جعلی سرٹیفکیٹ تیار کروائے، جس کے مطابق اس کی پہلی اہلیہ کی حالت نازک تھی. جب اس کے دئیے گئے سرٹیفکیٹ کو تصدیق کیلئے انویسٹی گیشن بیورو کے پاس بھیجا گیا تو پتہ چلا کہ یہ جعلی تھا. اس شخص سے تفتیش کی گئی تو اس کا کہنا تھا کہ وہ تیسری شادی کرنا چاہتا تھا مگر ذاتی وجوہ کی بناءپر یہ شادی کسی سعودی خاتون کی بجائے غیر ملکی خاتون سے کرنا چاہتا تھا. اسی لئے اس نے وزارت داخلہ کو درخواست دی تھی تاکہ وہ کسی غیر ملکی خاتون سے شادی کرسکے. جلد از جلد شادی کرنے کی کوشش میں اس نے جعلی دستاویزات بنوائیں، جس کا نتیجہ یہ ہوا کہ نہ صرف یہ دنیا کے سامنے رسوا ہوگیا بلکہ دولہا بن کر سہرا سجانے کا خواب بھی چکنا چور ہو گیا. عدالت نے اس کے حالات کے پیش نظر اسے جیل بھیجنے کی بجائے سرعام رسوا کرنے کی سزا سنائی ہے، جبکہ اسے یہ تحریری وعدہ بھی کرنا ہوگا کہ آئندہ کبھی جعلسازی نہیں کرے گا.
..


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top