کیپیٹل اخراجات کو کنٹرول کرنے اور سرکاری منصوبوں کو بہتر طور پر بروئے کار لانے کے لئے نیشنل پراجیکٹ مینجمنٹ آفس بھی قائم کیا گیا

ریاض (قدرت روزنامہ11-جنوری-2017) سعودی حکومت نے معیشت کو سہارا دینے کے لئے اخراجات میں کمی لانے کا سلسلہ تو شروع کر ہی رکھا تھا لیکن اب ایک بڑا قدم اٹھاتے ہوئے اربوں ڈالر کے ایسے پراجیکٹ ختم کرنے کا فیصلہ بھی کرلیا ہے کہ جن سے لاکھوں غیر ملکیوں کا روزگار وابستہ ہے. ویب سائٹ بلومبرگ کے مطابق سعودی حکام نے تقریباً 20 ارب ڈالر (تقریباً 20 کھرب پاکستانی روپے) کے پراجیکٹ ختم کرنے کے لئے بین الاقوامی کمپنی پرائس واٹر ہاﺅس کوپرز(PwC) کی خدمات حاصل کر لی ہیں.

رپورٹ کے مطابق وزارت معیشت و منصوبہ بندی نے 69ارب ڈالر (تقریباً 69 کھرب پاکستانی روپے) کے سرکاری منصوبوں کا جائزہ لینے کے لئے PwCکی خدمات حاصل کی ہیں تاکہ ان میں سے تقریباً ایک تہائی کا خاتمہ کیا جاسکے. ذرائع کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ جو پراجیکٹ ختم کئے جارہے ہیں ان میں ہاﺅسنگ، ٹرانسپورٹ، صحت اور تعلیم کی وزارتوں کی جانب سے دئیے گئے کنٹریکٹ شامل ہیں. سال رواں کے بجٹ کا اعلان کیا گیا تو حکومتی اخراجات کو محدود کرنے کے لئے ایک خصوصی دفتر کا قیام بھی عمل میں لایا گیا. کیپیٹل اخراجات کو کنٹرول کرنے اور سرکاری منصوبوں کو بہتر طور پر بروئے کار لانے کے لئے نیشنل پراجیکٹ مینجمنٹ آفس بھی قائم کیا گیا. بلومبرگ کا مزید کہنا ہے کہ کمپنی PwCاور سعودی وزارت معیشت نے اربوں ڈالر کے منصوبے ختم کئے جانے کی اطلاعات پر کسی بھی قسم کے تبصرے سے گریز کیا ہے...


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top