تجویز کو شاہ عبداللہ نے پسند کیا اور اسے او آئی سی کے ایجنڈے پر لانے کی خواہش ظاہر کی،ہاتیر محمد

ریاض(قدرت روزنامہ10-جنوری-2017)مسلم متحدہ فوج کی تجویز 2005 میں مہاتیر محمد اورفضل محمد کی جانب سے دی گئی تھی. تنظیم مبصرین اسلامی کے ترجمان فضل محمد اور ملائیشیا کے مہاتیر محمد کی جانب سے سعودی فرمانروا شاہ عبداللہ کو تجویز دی گئی تھی.

مہاتیر محمد کے مطابق اس تجویز کو شاہ عبداللہ نے پسند کیا اور اسے او آئی سی کے ایجنڈے پر لانے کی خواہش ظاہر کی،تاہم اس وقت چند ممالک کے تحفظات کی وجہ سے متحدہ دفاعی فورس کے قیام کو عملی جامہ نہ پہنایا جا سکا، مگر اب مشرق وسطیٰ کی موجودہ صورتحال خصوصاً شمال مغرب عراق میں داعش کے بڑھتے ہوئے اثر و رسوخ کی وجہ سے سعودی عرب نے اس تجویز کو از خود عملی شکل دی، متحدہ افواج کے قیام سے آگاہی رکھنے والے ذرائع نے بتایا کہ آذر بائیجان انڈونیشیا اور تاجکستان اس اتحاد میں شامل ہونے کا فیصلہ کرچکے ہیں اس سے اتحاد کی تعداد 42تک پہنچ جائے گی ...


قدرت میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
Loading...

تازہ ترین

To Top